سندھ ہائی کورٹ :رضاکارانہ رقم جمع کرانے والے کرپٹ افسران کی عہدوں پر بحالی سے متعلق درخواست پر سپریم کورٹ کا فیصلہ پیش کرنے کی ہدایت

منگل نومبر 17:55

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 20 نومبر2018ء) سندھ ہائی کورٹ نے رضاکارانہ رقم جمع کرانے والے کرپٹ افسران کی عہدوں پر بحالی سے متعلق درخواست پر سپریم کورٹ کا فیصلہ پیش کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے سماعت 16جنوری تک ملتوی کردی ہے ۔ہفتہ کو سندھ ہائی کورٹ میں رضاکارانہ رقم جمع کرانے والے کرپٹ افسران کی عہدوں پر بحالی کے معاملے کی سماعت ہوئی ۔

(جاری ہے)

نیب نے موقف دیا کہ ملزم غلام مصطفی لند کیخلاف ریفرنس احتساب عدالت میں زیر سماعت ہے، کیس میں غلام مصطفی لند، حسن نقوی سمیت دیگر پلی بارگین کی رقم واپس کرچکے ہیں۔سرکاری وکیل نے موقف دیا کہ ہائیکورٹ کے فیصلے کے خلاف سندھ حکومت نے سپریم کورٹ میں درخواست دائر کر رکھی ہے،سپریم کورٹ نے فوری سماعت کی درخواست مسترد کردی۔چیف جسٹس سندھ ہائی کورٹ کے احکامات پر سابق سیکریٹری خزانہ حسن نقوی کو عہدے سے ہٹایا گیا۔عدالت نے کہا کہ سپریم کورٹ کے احکامات کے بعد ہی اس کیس کو دیکھیں گے۔آئندہ سماعت پر سپریم کورٹ کا فیصلہ پیش کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے عدالت نے 16 جنوری تک سماعت ملتوی کردی۔