وزیر اعظم عمران خان عوامی فلاح و بہبود اور ترقیاتی کاموں میں ذاتی دلچسپی لیتے ہیں‘ چودھری پرویزالٰہی

صوبے میں کاروبار کیلئے ساز گار ماحول فراہم کرنے کیلئے حکومت بیرونی سرمایہ کاروں کو سہولیات دے گی ‘سپیکر پنجاب اسمبلی

جمعرات دسمبر 20:13

وزیر اعظم عمران خان عوامی فلاح و بہبود اور ترقیاتی کاموں میں ذاتی دلچسپی ..
لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 06 دسمبر2018ء) سپیکر پنجاب اسمبلی چودھری پرویزالٰہی سے لندن کی کونسل ہنسلو کی میئر مس سمیعہ چودھری نے اسمبلی چیمبر میں ملاقات کی۔ سپیکر نے میئر ہنسلو کوپنجاب اسمبلی کی تاریخ اور پارلیمانی روایات سے آگاہ کیا۔ ملاقات میںصوبائی وزیر حافظ عمار یاسر، سیکرٹری پنجاب اسمبلی محمد خان بھٹی، کونسلر مس نثار ملک، کونسلر دانش سعید، نسمہ ملک، غلام مرتضیٰ، ساجد بخاری اور ساجد محمود بھی موجود تھے۔

چودھری پرویزالٰہی نے کہا کہ پاکستان دنیا میں امن کا خواہاں ہے اور دہشت گردی کے خلاف جنگ میں ہم نے بھاری قیمت چکائی ہے۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان عوامی فلاح و بہبود اور ترقیاتی کاموں میں ذاتی دلچسپی لیتے ہیں۔ چودھری پرویزالٰہی نے کہا کہ عثمان بزدار عوامی وزیراعلیٰ ہیں وہ بڑا اچھا کام کر رہے ہیں، ہمارے سابقہ دور کے ترقیاتی منصوبے نہ روکے جاتے تو آج صوبہ کی صورتحال مختلف ہوتی تاہم اب یہ منصوبے جلد پایہ تکمیل کو پہنچیں گے۔

(جاری ہے)

سپیکر نے کہا کہ صوبہ میں کاروبار کیلئے سازگار ماحول فراہم کرنے کیلئے حکومت بیرونی سرمایہ کاروں کو سہولیات دے گی۔ انہوں نے کہا کہ ہمارا اورنج لائن ٹرین انڈر گرائونڈ بنانے کا منصوبہ تھا تا کہ سڑکوں پر ٹریفک متاثر نہ ہو۔ چودھری پرویزالٰہی نے کہا کہ بچوں کو بھیک مانگنے کی لعنت سے بچانے کیلئے ہم نے چائلڈ پروٹیکشن بیورو میں اصلاحات کیں، ہمارے دور حکومت میں سپیشل بچوں کیلئے سکول بنائے گئے اور پاکستان کی تاریخ میں پہلی بار بلائنڈز کالج کا قیام عمل میں لایا گیا۔

میئر ہنسلو مس سمیعہ چودھری نے جمہوری روایات کے فروغ اور ملکی تعمیر و ترقی کیلئے حکومت کی کوششوں کو خراج تحسین پیش کیا۔ انہوں نے پنجاب اسمبلی کے رولز آف پروسیجر سے بھی آگاہی حاصل کی۔ انہوں نے چودھری پرویزالٰہی کی وزارتِ اعلی کے دور میں ایمرجنسی سروس ریسکیو1122 کے قیام، میٹرک تک مفت تعلیم، بچوں اور بچیوں کیلئے وظائف اور دیگر ترقیاتی کاموں کی تعریف کی۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں جمہوریت دن بدن مضبوط ہو رہی ہے۔ قبل ازیں برطانوی وفد نے پنجاب اسمبلی کی کارروائی بھی دیکھی۔