وزیراعظم کا امریکی صدر کے خط کا جواب دینے کا فیصلہ

وزیراعظم عمران خان نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے خط پر مثبت رد عمل دینے کا فیصلہ کیا۔ خط میں پاک امریکہ اسٹریٹجک مذاکرات کی بحالی اور دو طرفہ تجارتی و معاشی روابط کو بڑھانے پر زور دیا جائے گا۔ میڈیا رپورٹس

Muqadas Farooq مقدس فاروق اعوان جمعہ دسمبر 13:35

وزیراعظم کا امریکی صدر کے خط کا جواب دینے کا فیصلہ
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 07 دسمبر 2018ء) : وزیراعظم عمران خان نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے خط کا جواب دینے کا فیصلہ کیا ہے۔میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ وزیراعظم عمران خان نے امریکی صدر کی طرف سے بھیجے گئے خط پر مثبت رد عمل دینا کا فیصلہ کیا ہے۔اس حوالے سے وزیراعظم نے و زارت خارجہ کو امریکی صدر کا خط دے کر جواب تیار کرنے کی ہدایت کی ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق وزیراعظم عمران خان کی طرف سے بھیجے گئے خط میں افغان مفاہمتی عمل میں کردار ادا کرنے کی یقین دہانی کروائی جائے گی۔ خط میں پاک امریکہ اسٹریٹجک مذاکرات کی بحالی کی تجویز دی جائے گی۔ جب کہ دو طرفہ تجارتی و معاشی روابط کو بڑھانے پر زور دیا جائے گا۔واضح رہےو زیراعظم عمران خاننے اینکرز اور سینئر صحافیوں سے ملاقات کے دوران بتایا تھاکہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے انہیں خط لکھا ہے، جس میں پاکستان سے افغان طالبان کو مذاکراتکی میز پر لانے کے لیے تعاون مانگا ہے. امریکی محکمہ خارجہ اور نیشنل سیکورٹی کونسل نے امریکی صدر ٹرمپ کی جانب سے وزیراعظم عمران خان کو خط بھیجنے کی تصدیق کی تھی اور کہا کہ خط میں پاکستان کی جانب سے اپنی سرزمین پرطالبان کے ٹھکانے ختم کرنے کی صلاحیت کا اعتراف کیا گیا ۔

(جاری ہے)

وائٹ ہاﺅس نے امریکی صدر ٹرمپ کی جانب سے عمران خان کو خط بھیجنے کی تصدیق کردی، ترجمان محکمہ خارجہ اورنیشنل سیکورٹی کونسل کا کہنا ہے کہ وزیراعظم پاکستان سے افغانستان میں امن کیلئے تعاون کی درخواست کی ہے. خط میں پاکستان کی جانب سے اپنی سرزمین پرطالبان کے ٹھکانے ختم کرنے کی صلاحیت کا اعتراف کیا گیا ہے اور پاکستان سے امریکا کے خصوصی سفیرزلمے خلیل زادسے تعاون کی درخواست بھی کی گئی. خط میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ افغان امن عمل میں پاکستان کی مددپاک امریکا تعلقات کی بہتری کے لئے بنیادی ہے. خیال رہے گذشتہ روز امریکی نمائندہ خصوصی برائے افغانستان زلمے خلیل زاد پاکستان پہنچے تھے ، جہاں انھوں نے دفتر خارجہ میں شاہ محمود قریشی سے ملاقات کی اور شاہ محمودقریشی کو افغانستان مفاہمتی عمل کی تفصیلات سے آگاہ کیا. نمائندہ خصوصی نے پاکستانی تعاون کے لئے امریکی صدر کے وزیراعظم عمران کے نام لکھے خط کی تفصیلات سے بھی آگاہ کیا.