غیر ملکی ماڈل پاکستانی جیل میں دو کتابوں کی مصنفہ بن گئیں

پاکستانی قومی زبان کے ساتھ ساتھ سلائی کا کام بھی سیکھ رہی ہوں۔ غیر ملکی ماڈل ٹریسا کی گفتگو

Muqadas Farooq مقدس فاروق اعوان جمعہ دسمبر 14:57

غیر ملکی ماڈل پاکستانی جیل میں دو کتابوں کی مصنفہ بن گئیں
لاہور (اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 07 دسمبر 2018ء) : غیر ملکی ماڈل ٹریسا پاکستانی جیل میں دو کتابوں کی مصنفہ بن گئیں۔میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ غیر ملکی ماڈل ٹریسا کا کہنا ہے کہ رہائی پانے کے بعد جلد ہی میں ان کتابوں کو چھپواؤں گی۔ نے میڈیا کے باہر گفتگو کرتے کہا کہ پاکستانی کلچر اور قیدی کی زندگی پر دو کتابیں لکھی ہیں۔ملزمہ نے خواہش کا اظہار کیا ہے کہ جلد جیل سے رہائی پا کر اپنی دونوں کتابوں کو چھپواؤں گی۔

جیل میں ساتھی خواتین بھی بہت اچھی ہیں۔پاکستانی قومی زبان کے ساتھ ساتھ سلائی کا کام بھی سیکھ رہی ہوں۔دوسری جانب غیر ملکی ماڈل نے اپنے ملک کی سفارت خانے کی خاتون سے ملاقات کی اور اپنے کیس سے متعلق بریفنگ دی۔ایڈیشنل سیشن جج علی رضا کے ٹریننگ پر ہونے کی وجہ سے ملزم کے خلاف کیس کی سماعت 10 دسمبر تک ملتوی کر دی گئی۔

(جاری ہے)

گذشتہ سماعت پر یرملکی ماڈل ٹریسا عدالتی کارروائی کے بعد احاطہ عدالت میں رونا شروع ہوگئی اور روتے ہوئے اسے بخشی خانے منتقل کیا گیا۔

غیر ملکی ماڈل ملزمہ کا کہنا تھا کہ اسے اپنی فیملی کی بہت یاد آتی ہے اور وہ ان کے بغیر بہت اداس ہو چکی ہے اس لئے اس کیخلاف کیس کا ٹرائل جلد اور بروقت مکمل کیا جائے۔ٹریسا نے کہا کہ میں تھک گئی ہوں روزنہ عدالت میں پیش ہوتی ہوں لیکن اس کیس میں کوئی پیش رفت نہیں کی جا رہی۔اس کیس کی کوئی کاروائی نہیں ہو رہی نہ جانے اس کا فیصلہ کب ہو گا۔واضح رہے کہ ملزمہ نے اپنے ابتدائی بیان میں موقف اختیار کیا تھا کہ وہ ماڈلنگ کے لیے پاکستان آئی تھی منشیات کا اسے کوئی علم نہیں ہے۔ کسٹم حکام کے مطابق ملزمہ کو لاہور ائیرپورٹ سے ساڑھے آٹھ کلو ہیروئن اسمگل کرنے کے الزام میں گرفتار کیا گیا تھا۔ ملزمہ کے خلاف کسٹم حکام نے چالان مکمل کرکے جمع کروا رکھا ہے۔