بھارت میں انتہائی افسوسناک واقعہ

چار سالہ بچی کو اس کے ہم جماعتوں نے ہی ہراسگی کا نشانہ بنا ڈالا، والدین کا تشویش کا اظہار

Sumaira Faqir Hussain سمیرا فقیرحسین جمعہ دسمبر 16:16

بھارت میں انتہائی افسوسناک واقعہ
نئی دہلی (اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 07 دسمبر 2018ء) : بھارت جو خود لبرل ہونے کا دعویٰ کرتا ہے وہاں آئے روز انسانیت سوز واقعات پیش آتے ہیں جنہیں سُن کر انسانیت بھی شرما جاتی ہے۔ حال ہی میں نئی دہلی میں ایک چار سالہ بچی کو اس کے اپنے ہم جماعتوں نے ہراسگی کا نشانہ بنا ڈالا جس پر والدین نے سخت تشویش اور تحفظات کا اظہار کیا ہے۔ پولیس کے مطابق یہ واقعہ نئی دہلی میں واقعہ ایک نجی اسکول میں پیش آیا البتہ تاحال بچی کو ہراساں کرنے والے ہم جماعت کی تاحال شناخت نہیں ہو سکی۔

پولیس نے پی او سی ایس او ایکٹ کے تحت مقدمہ درج کر لیا ہے۔ متاثرہ بچی کی والدہ نے گذشتہ روز رانہولا پولیس اسٹیشن سے رجوع کیا اور اپنی شکایت درج کروائی جس میں کہا گیا کہ میری چار سالہ بیٹی کو مبینہ طور پر اُس کے کسی ہم جماعت نے جنسی طور پر ہراساں کیا ہے۔

(جاری ہے)

پولیس کا کہنا ہے کہ واقعہ کا مقدمہ درج کر کےتحقیقات کا آغاز کر دیا گیا ہے۔ واضح رہے کہ یہ پہلی مرتبہ نہیں ہے کہ بھارت کے کسی اسکول میں کم سن بچوں کو جنسی ہراسگی کے کیس میں ملوث دیکھا گیا۔

گذشتہ برس بھی ایسا ہی ایک کیس رپورٹ ہوا تھا جس میں کم سن بچے نے اپنی ہم جماعت کو غیر مناسب انداز میں پکڑا اور پنسل کی مدد سے اسے ہراساں کیا تھا۔اس طرح کے کیسز رپورٹ ہونے پر والدین نے سخت تحفظات کا اظہار کیا ہے اور متعلقہ اسکولوں کی انتظامیہ کو بھی اس حوالے سے اپنی شکایات اور تحفظات سے آگاہ کیا ہے۔ والدین کا کہنا ہے کہ ہم بچوں کو اسکول چھوڑ کر جاتے ہیں جس کے بعد بچے اسکول انتظامیہ اور اُساتذہ کی ذمہ داری ہیں۔ ان کی موجودگی میں بھی اگر ایسے واقعات پیش آئیں گے تو اس پر افسوس کے علاوہ کچھ نہیں کیا جا سکتا۔ دوسری جانب اسکول انتظامیہ نے اس حوالے سے تربیت کا ملبہ والدین پر ڈال دیا ہے۔

متعلقہ عنوان :