حکومت نے کاروباری سہولیات کی زیادہ سے زیادہ فراہمی کے ذریعے ملک کودنیا کے پہلے 100ممالک میں شامل کرنے کاہدف مقرر کررکھا ہے، وزیراعظم

معاشی پالیسی کے قیام میں تاجروں کی تجاویز کو بھی شامل کیا جائے ، گورنر ہائوس میں کراچی چیمبر، ایف پی سی سی آئی اور تاجروں سے ملاقات میں گفتگو

اتوار دسمبر 19:10

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 09 دسمبر2018ء) وزیرِ اعظم عمران خان نے کہاہے کہ حکومت نے کاروباری سہولیات کی زیادہ سے زیادہ فراہمی اورطریقہ کارکو آسان بنانے کے ذریعے ملک کودنیا کے پہلے ایک سوممالک میں شامل کرنے کاہدف مقرر کررکھاہے،معاشی پالیسی کے قیام میں تاجروں کی تجاویز کو بھی شامل کیا جائے ۔ وزیرِ اعظم عمران خان سے گورنرہاس میں کراچی چیمبر آف کامرس، ایف پی سی سی آئی کے وفد اور صنعت کاروں نے ملاقات کی۔

اس موقع پر گورنر عمران اسماعیل، وزیرِ خزانہ اسد عمر، وفاقی وزیر خالد مقبول صدیقی، خسرو بختیار اور فیصل واوڈا بھی موجود تھے۔وفد میں کراچی کے معروف صنعتکارسراج قاسم تیلی، طاہر خالق، ہارون آگر، شمیم فرپو، جنید اسمعیل ماکدہ اور دیگر شامل تھے۔

(جاری ہے)

صنعت کاروں اور تاجروں نے وزیرِ اعظم کو اپنے مسائل سے آگاہ کیا، تاجروں نے وزیرِ اعظم کو یقین دہانی کرائی کہ تاجر برادری ملکی ترقی کے لیے آپ کے ساتھ کھڑی ہے، معاشی پالیسی کے قیام میں تاجروں کی تجاویز کو بھی شامل کیا جائے۔

اس موقع پروزیرِ اعظم عمران خان نے کہا کہ بیرونی سرمایہ کاری سے کراچی کا مثبت امیج اجاگر ہوگا، حکومت تاجر، صنعت کار برادری کو ہر ممکن سہولیات فراہم کرے گی۔وفد نے انجینئرنگ ڈویلپمنٹ بورڈ کی بحالی کے حکومتی فیصلے کا خیر مقدم کیا۔ وزیراعظم عمران خان نے ملاقات کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ تاجر برادری اور صنعت کاروں کو ہر ممکنہ سہولت فراہم کرنا حکومت کی اولین ترجیح ہے وزیراعظم کا کہنا تھا کہ تاجر برادری سے کیے گئے وعدے پورے کریں گے، معیشت سے متعلق ہر فیصلے پر تاجر برادری کی مشاورت یقینی بنائی جائے گی۔

موجودہ حکومت ماضی کی حکومتوں کی پالیسیوں کے برعکس تاجر برادی سے کئے گئے تمام وعدوں کی تکمیل یقینی بنائے گی اور معیشت سے متعلق ہر فیصلے پر بزنس کمیونٹی کی مشاورت کو یقینی بنایا جائے گا۔وزیر اعظم نے کہا کہ وفاق کے تعاون سے جاری منصوبے جلد مکمل کیے جائیں گے، صوبے اور وفاق میں ہم آہنگی کو فروغ دیا جائے گا اور تاجروں کے خدشات و مسائل دور کیے جائیں گے۔

انہوں نے کہاکہ حکومت کاروباری اخراجات اورلاگت میں مزید کمی لانے کے لئے مختلف ڈیوٹیز اورٹیکسوں میں کمی کے معاملے پرغور کررہی ہے۔ انہوں نے کہاکہ کاروباری طبقے کے مسائل کے حل اورٹیکسوں کی موجودہ شرح میں خامیوں کو دور کرنے کے لئے حکومت قومی ٹیرف پالیسی وضع کرنے پربھی کام کررہی ہے۔اس موقع پر وزیرِ خزانہ اسد عمر نے کہا کہ صنعت کار معیشت میں ریڑھ کی ہڈی ہیں، انھیں تنہا نہیں چھوڑیں گے۔