عمرکوٹ کی پسماندے کے خاتمہ کیلئے شہری کا وزیر اعلی سند ھ کو خط

جمعرات دسمبر 22:47

عمرکوٹ ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - اے پی پی۔ 13 دسمبر2018ء) عمرکوٹ ضلع میں دل کے امراض کا ہسپتال نہ ہونے اور سڑک ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہونے سے اموات کی شرح بڑھ گئی ہے حکومت لوگوں کی زندگیاں بچانے کیلئے ہسپتال کا قیام عمل میں لائے،اس ضمن میں سٹیزن ایکشن کمیٹی کنری کے چیئرمین محمد اشرف آرائیں نے وزیر اعلی سندھ سید مراد علی شاھ کو ایک تحریری درخواست ارسال کرتے ہوئے کہا ہیکہ لاکھوں کی آبادی والے ضلع عمر کوٹ میں قیام پاکستان سے اب تک دل کے امراض کا اسپتال کا قیام نہ ہو سکا ہے جبکہ دل کے امراض میں تیزی سے اضافے کے پیش نظردل کے امراض کا اسپتال اب ایک ضرورت بن چکا ہے حکومت سندھ کی جانب سے ٹنڈو محمد خان اور تھر کے ضلع مٹھی میں دل کے امراض کے ہسپتال کا قیام انتہائی خوش آئند اقدام ہے جس سے عوام کو بھر پور فائدہ پہنچ رہا ہے مگر مٹھی اور ٹنڈو محمد خان کا فاصلہ زیادہ ہونے کی وجہ سے ایمرجنسی کی صورت میں مریض کا زندہ پہنچنا کافی مشکل ہے اگر مریض کو لیجایا بھی جاتا ہے تو کنری سے کوٹ غلام محمد تک سڑک ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہونے کے باعث متاثرہ مریض راستے ہی میں دم توڑ دیتا ہے جبکہ عوام کے جان ومال کی حفاظت حکومت کی ذمیداری ہے انہوں نے درخواست میں پی پی پی کے مرکزی چیئرمین بلاول بھٹو زرداری اور وزیر اعلی سندھ سے مطالبہ کیا ہیکہ فوری طور پر کنری یا ضلع ہیڈ کوارٹر عمر کوٹ میں مٹھی اور ٹنڈومحمد خان کی طرح این،آئی،سی،وی،ڈی اسپتال کا قیام عمل میں لاکر قیمتی انسانی جانوں کو بچایا جائے۔