بھارت میں مسلمان فنکاروں کے خلاف گیم پلان تیار کر لیا گیا

بولی وڈ اداکاروں کی سینما کے مستقبل کے حوالے سے بھارتی وزیراعظم سے ملاقات، شاہ رخ خان اور سلمان خان سمیت کسی مسلمان اداکار کو مدعو نہ کیا گیا، سوشل میڈیا پر نریندر مودی پر سخت تنقید

Muqadas Farooq مقدس فاروق اعوان جمعہ جنوری 17:11

بھارت میں مسلمان فنکاروں کے خلاف گیم پلان تیار کر لیا گیا
نئی دہلی (اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔11جنوری2019ء) بھارت میں مسلمان فنکاروں کے خلاف گیم پلان تیار کر لیا گیا۔قومی اخبار کی ایک رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ بھارتی وزیراعظم نریندر مودی نے گزشتہ روز ہندی فلموں سے وابستہ لوگوں نے ملاقات کی۔نریندر مودی سے ملاقات کرنے والے بھارتی فلمی ستاروں میں عالیہ بھٹ، رنویر سنگھ، رنبیر کپور، کرن جوہر سمیت اہم ستارے شامل تھے۔

تاہم یہاں پر حیران کن بات یہ ہے کہ اس ملاقات میں بولی وڈ انڈسٹری کا کوئی خان شامل نہیں تھا۔میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ بھارتی وزیراعظم نریندر مودی سے ملاقات کے لیے بولی وڈ کے کسی ایک بھی مسلم فنکار کو دعوت نامہ نہیں بھیجا گیا۔حالانکہ ان دنوں میں بھی بھارت میں مسلم فنکاروں کی اکثریت سب پر حاوی ہے جن میں شاہ رخ خان،عامر خان، سلمان خان اور سیف علی خان سمیت کئی اداکار شامل ہیں۔

(جاری ہے)

کئی مسلم اداکاروں نے بھارت کو سینکٹروں کامیاب فلمیں دی بھارت کا نام دنیا بھر میں روشن کیا۔تاہم اب بھارتی حکومت انہی مسلمان فنکاروں کو بھول گئی ہے۔بھارتی میڈیا کے حوالے سے یہ خبریں بھی گردش کر رہی ہیں کہ سیف علی خان،شاہ رخ خان، سلمان خان،عامر خان کی فلمز پر برا وقت جان بوجھ کر لایا جا رہا ہے۔اور مسلمان فنکاروں کی فلمیں مسلسل فلاپ جا رہی ہیں جس کو ایک سوچے سمجھے منصوبے کے تحت فلاپ کروایا جا رہا ہے۔

سوشل میڈیا صارفین نے بھی اس حوالے سے تبصرے کیے ہیں اور بھارتی حکومت پر شدید تنقید کی ہے ایک صارف نے کہا ہے کہ اس بات پر یقین کرنا مشکل ہے کہ فلم انڈسٹری سے کسی خان کو مدعو نہیں کیا گیا اور اگر یہ ملاقات صرف نئی نسل کے فلمی ستاروں کی تھی تو اس میں کرن جوہر، ایکتا کپور اور روہیت شیٹھی کا کیا کام ؟۔
ایک صارف نے مودی کو بہت بڑا اداکار قرار دےد یا اور کہا کہ بھارت کے ورسٹائل اداکار ایک بالی وڈ اداکار کے ساتھ
ا س کے علاوہ بھی کئی صارفین نے بھارتی حکومت پر تنقید کی اور کہا کہ مسلمان اداکاروں نے اپنی آدھی زندگی بھارتی فلم انڈسٹری کو دی اور انہیں کاروبار کر کے دیا۔

پاکستان کے مسلمان فنکاروں کے ساتھ تو پہلے ہی برا رویہ اپنایا جاتا ہے تاہم شاہ رخ خان اور سلمان خان جیسے بڑے اداکاروں کے ساتھ یہ امتیازی سلوک قابل افسوس ہے جس نے بھارت کے انتہا پسند رویے کو بے نقاب کر دیا ہے۔