لاہور میں جوس کارنر کی آڑ میں فحاشی کے اڈے کھل گئے

جوس کارنر کے اوپر صرف 1500روپے میں کمرہ دستیاب، نوجوان نسل کس طرف جا رہی ہے؟ والدین کے لیے بھی لمحہ فکریہ

Muqadas Farooq مقدس فاروق اعوان ہفتہ جنوری 12:03

لاہور میں جوس کارنر کی آڑ میں فحاشی کے اڈے کھل گئے
لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 12 جنوری2019ء) لاہور میں جوس کارنر کی آڑ میں شرمناک دھندا شروع ہو گیا۔اسی حوالے سے ایک ویڈیو سامنے آئی ہے کہ جس میں بتایا جا رہا ہے کہ نوجوان لڑکے لڑکیوں کو کس طرح بے حیائی کی طرف لے جایا جا رہا ہے اور اس کام کے لیے جگہ بھی مہیا کی جا رہی ہے۔ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ ایک نوجوان جو کسی جوس کارنر میں موجود ہے وہ ویٹر سے پوچھتا ہے کہ کتنے پیسے ہو گئے۔

جس کے بعد وہ سوال کرتا ہے کہ کیا یہاں کوئی کمرہ بھی ملے گا؟۔جس کے بعد ویٹر جواب دیتا ہے کہ جی ہاں اوپر کمرہ بھی موجود ہے۔جس پر نوجوان کہتا ہے کہ پہلے بتانا تھا تو ویٹر بھی فوراََ جواب دیتا ہے کہ اب بتا دیا ہے نہ سر۔میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ اس گھناؤنے کام کے لیے نوجوانوں کو 4 سو روپے میں کیبن اور 1500 میں جوس کارنر کے اوپر کمرے دستیاب ہوتے ہیں۔

(جاری ہے)

یہاں پر یہ بھی سوالات اٹھنے لگ گئے ہیں کہ آخرکالجر اور سکولز میں قریب اتنی زیادہ تعداد میں جوس کارنر کیوں کھولے جا رہے ہیں؟۔جب کہ یہ سوال بھی اٹھتا ہے کہ گھر سے تعلیم کی غرض سے نکلنے والے نوجوان آخر کس کام کی طرف جا رہے ہیں۔یہ تمام صورتحال والدین اور اساتذہ کے لیے لمحہ فکریہ ہے کہ وہ اپنے بچوں پر نظر رکھیں کہ وہ کب اور کہاں ہوتے ہیں۔والدین کو اپنے بچوں کی سرگرمیوں پر نظر رکھنے کی بھی ضرورت ہے۔

متعلقہ عنوان :