لاہور، ہماری ساری توجہ 10 نئی ٹرینوں پر ہے، ہم دو نئی وی وی آئی پی ٹرینیں چلانے جارہے ہیں، شیخ رشید احمد

مدثرشاہ زیدی نامی شخص نے انجنوں میں ٹریکنگ سسٹم لگانے کے لیے ہمیں بالکل مفت دیئے ہیں وہ آج سے انجنوں میں لگنا شروع ہوجائیں گے،فاقی وزیر ریلوے

ہفتہ جنوری 22:51

لاہور، ہماری ساری توجہ 10 نئی ٹرینوں پر ہے، ہم دو نئی وی وی آئی پی ٹرینیں ..
لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 12 جنوری2019ء) ہماری ساری توجہ 10 نئی ٹرینوں پر ہے۔ ہم دو نئی وی وی آئی پی ٹرینیں چلانے جارہے ہیں۔ مدثرشاہ زیدی نامی شخص نے انجنوں میں ٹریکنگ سسٹم لگانے کے لیے ہمیں بالکل مفت دیئے ہیں وہ آج سے انجنوں میں لگنا شروع ہوجائیں گے۔ان خیالات کا اظہاروفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید احمد نے ریلوے ہیڈکوارٹرزآفس لاہور میں کیا۔

وزیر ریلوے شیخ رشید احمد نے کہا کہ ہم وزیر اعظم پاکستان عمران خان کو دعوت دے رہے ہیں کہ وہ دونئی ٹرینوں کامارچ میں افتتاح کریں اور لاہور ریلوے اسٹیشن کو بہتر بنایا جارہا ہے اس کے حوالے سے یہاں دورہ کریں۔ہم نے ٹرینوں میں کھانے اور بیڈنگ کے حوالے سے انکوائری کمیٹی چیئرمین ریلویز کی صدارت میں تشکیل دے دی ہے۔

(جاری ہے)

اس کے ساتھ ہم نے یہ فیصلہ بھی کیاہے کہ نئی ٹرینوں میں کھانے اور بستر کی کمپلیمنٹری سروس دیں گے۔

اس کے ساتھ ساتھ جو صفائی کی شکایات ہمیں موصول ہوئی ہیں اُن کا ہم نے سنجیدگی سے نوٹس لیاہے تمام ڈی ایس صاحبان ٹرینوں میں صفائی اور مینٹینینس کے ذمہ دار ہوں گے۔ ایک مہینے کے اندر اندر تمام ڈی ایس صاحبان کو بڑے ریلوے اسٹیشنوں پر فارمیسی سٹورز بنانے کی ہدایت کی ہے جو 24 گھنٹے کھلے رہا کریں گے۔روہڑی ریلوے اسٹیشن پر ہم نے نیا ریلوے اسٹیشن بنانے کا فیصلہ کیا ہے جس میں 100 کمرشل دکانیں بھی تیار کی جائیں گی اس حوالے سے ریلوے کا سات افسران پرمشتمل انویسمنٹ بورڈ جس میں چیئرمین، جی ایم اور ایڈیشنل جنرل منیجرز شامل ہیں وہ اس کا فیصلہ کریں گے اُس کو کیا شکل دینی ہے یہ شاپنگ مال ہوگا اور اُس کے اوپر ہم ریسٹورینٹ بھی بنائیں گے کیونکہ سب سے زیادہ گاڑیاں روہڑی ریلوے اسٹیشن پر رُکتی ہیں جو اس وقت بہت بُری حالت میں ہے۔

اس کے سا تھ ساتھ ہم ایسا نیا پلیٹ فارم اور نیا اسٹیشن بنانے جارہے ہیں جوسندھی ثقافت کا آئینہ دار ہوگا۔ وزیر ریلوے شیخ رشید احمد نے کہا کہ ایک ہفتے میں بغیر ٹکٹ سفر کرنے والوں سے تین کروڑ روپے وصولی ہوئی ہے ہم نے پولیس کو بھی آج خودمختار ریڈ کے اختیارات دے دیئے ہیں جو اگلے پندرہ دن میں ریلوے اسٹیشنوں پر سفرکرنے والے مسافروں سے ٹکٹیں چیک کریں گے۔

تمام ایس ٹیز اور ٹکٹ کللٹر پر چیک رکھیں گے اور ہمارے افسران موقع پر ان کو کوتاہی برتنے پر سزائیں دیں گے جس پر انہیں اپیل کا حق بھی ہوگا۔ وزیر ریلوے نے مزید کہا کہ ہماری تمام ٹرینیں کامیابی سے چل رہی ہیں اس پر ہم لوگوں کا شکریہ ادا کرتے ہیں جنہوں نے ریلوے پر اعتماد کیاہم سوچ رہے ہیں کہ ٹکٹوں پرگفٹ سکیم شروع کریں کیونکہ ابھی ہمارے پاس ٹکٹوں کی گنجائش نہیں ہے۔

ہماری نئی پسنجر کوچز آجائیں تو زیادہ سفر کرنے والوں کے لیے گفٹ سکیم بھی متعارف کروائیں گے۔ہم نے اپنے ریزرویشن آفس جو 24گھنٹے کے لیے کھلے رکھے ہیں اور یکم دسمبر سے 30 دسمبر تک ایک مہینے میں رات 9 سے صبح آٹھ بجے تک 41 ہزار ٹکٹ اضافی فروخت ہوئے ہیں۔ میں ایک دفعہ پھر عوام کا شکر گزار ہوں جنہوں نے ریلوے پر اعتماد کرتے ہوئے ریلوے کے سفر کو ترجیح دی۔