این اے 91سرگودھا کے 20پولنگ اسٹیشنز پر دوبارہ ووٹنگ کا عمل جاری

مسلم لیگ (ن) اور تحریک انصاف کے امیدواروںکے درمیان کانٹے کا مقابلہ

Mian Nadeem میاں محمد ندیم ہفتہ فروری 13:41

این اے 91سرگودھا کے 20پولنگ اسٹیشنز پر دوبارہ ووٹنگ کا عمل جاری
سرگودھا(اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین-انٹرنیشنل پریس ایجنسی۔02 فروری۔2019ء) قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 91سرگودھا کے 20پولنگ اسٹیشنز پر دوبارہ ووٹنگ کا عمل جاری ہے. ہفتے کوسرگودھا کے حلقہ این اے 91میں 20پولنگ اسٹیشنز پر ری پولنگ کا عمل صبح 8بجے شروع ہوا جو بغیر کسی وقفے کے شام 5بجے تک جاری رہے گا. مسلم لیگ (ن)کے ڈاکٹر ذوالفقار بھٹی اور پاکستان تحریک انصاف کے عامر سلطان چیمہ کے درمیان کانٹے کا مقابلہ متوقع ہے.

حلقے میں امن وامان کے لئے تمام پولنگ اسٹیشنز کو حساس قرار دیا گیا ہے جبکہ پولنگ اسٹیشنز کے باہر سیکورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے ہیں، پولیس، رینجرز اور ایلیٹ فورس کو سیکورٹی پرتعینات کیا گیا ہے.

(جاری ہے)

این اے 91 میں 12ہزار 279خواتین سمیت 28ہزار 718ووٹرز حق رائے دہی استعمال کریں گے. عام انتخابات میں حلقے سے مسلم لیگ (ن)کے ذوالفقار بھٹی 87ووٹوں کی برتری سے کامیاب ہوئے تھے ،ان کی کامیابی کو تحریک انصاف کے امیدوار عامر سلطان چیمہ نے چیلنج کیا تھا.

ووٹوں کی دوبارہ گنتی کے دوران20 پولنگ اسٹیشنز کے تھیلوں کی سیلیں ٹوٹی پائی گئیں جس پر الیکشن کمیشن نے 20 پولنگ اسٹیشنز پر ری پولنگ کا حکم دیا تھا. یادر ہے کہ سپریم کورٹ نے این اے 91پرمشروط پولنگ کی اجازت دی تھی،ری پولنگ کے نتائج سپریم کورٹ میں جمع کرانے کا حکم دیا تھا. حلقے میں امن وامان کے لئے تمام پولنگ اسٹیشنز کو حساس قرار دیا گیا ہے جبکہ پولنگ اسٹیشنز کے باہر سیکورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے ہیں، پولیس، رینجرز اور ایلیٹ فورس کو سیکورٹی پرتعینات کیا گیا ہے.

این اے 91 میں 12ہزار 279خواتین سمیت 28ہزار 718ووٹرز حق رائے دہی استعمال کریں گے. عام انتخابات میں حلقے سے مسلم لیگ (ن)کے ذوالفقار بھٹی 87ووٹوں کی برتری سے کامیاب ہوئے تھے ،ان کی کامیابی کو تحریک انصاف کے امیدوار عامر سلطان چیمہ نے چیلنج کیا تھا. ووٹوں کی دوبارہ گنتی کے دوران20 پولنگ اسٹیشنز کے تھیلوں کی سیلیں ٹوٹی پائی گئیں جس پر الیکشن کمیشن نے 20 پولنگ اسٹیشنز پر ری پولنگ کا حکم دیا تھا. یادر ہے کہ سپریم کورٹ نے این اے 91پرمشروط پولنگ کی اجازت دی تھی،ری پولنگ کے نتائج سپریم کورٹ میں جمع کرانے کا حکم دیا تھا.