گیس قیمت میں اضافے سے تمام لوگ متاثر ہوئے ہیں، وزیر پٹرولیم کااعتراف

پانچ سال میں گیس کی قیمت میں اضافہ نہیں ہوا ، مجبوری میں قیمت بڑھانا پڑی ،ملک چلانا ہے تو عوام کو بوجھ بر داشت کر نا پڑیگا ،عوام کیلئے مشکل ہے،جن کے بل 20 ہزار سے زائد ہیں ان کی چار اقساط کی جائیں گی،آئندہ سال حالات بہتر ہوں گے، غلام سرور خان کی افتخار درانی کے ہمراہ پریس کانفرنس

ہفتہ فروری 17:11

گیس قیمت میں اضافے سے تمام لوگ متاثر ہوئے ہیں، وزیر پٹرولیم کااعتراف
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 02 فروری2019ء) وفاقی وزیر پٹرولیم غلام سرور خان نے اعتراف کیا ہے کہ گیس قیمت میں اضافے سے تمام لوگ متاثر ہوئے ہیں ، پانچ سال میں گیس کی قیمت میں اضافہ نہیں ہوا ، مجبوری میں قیمت بڑھانا پڑی ،ملک چلانا ہے تو عوام کو بوجھ بر داشت کر نا پڑیگا ،عوام کیلئے مشکل ہے،جن کے بل 20 ہزار سے زائد ہیں ان کی چار اقساط کی جائیں گی،آئندہ سال حالات بہتر ہوں گے۔

ہفتہ کو وفاقی وزیر پٹرولیم غلام سرور خان اور وزیراعظم کے مشیر افتخار درانی نے مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ گیس قیمت میں اضافے سے تمام لوگ متاثر ہوئے۔ انہوںنے کہاکہ گزشتہ حکومت نے پانچ سال میں گیس قیمت میں اضافہ نہیں کیا۔ انہوںنے کہاکہ گیس کمپنیوں کو 154 ارب روپے کا خسارہ تھا۔

(جاری ہے)

انہوںنے کہاکہ گیس چوری 50 ارب روپے سالانہ تھی۔

انہوںنے کہا کہ مہنگی لے کر سستی گیس بیچی جا رہی تھی۔ انہوںنے کہاکہ سالانہ 487 ارب روپے کی گیس خریدی جاتی تھی جو 337 ارب روپے کی بیچی جا رہی تھی ۔ انہوںنے کہاکہ مجبوری میں گیس کی کی قیمت بڑھانا پڑی۔ انہوںنے کہاکہ سردیوں میں کم سلیب والا بھی اونچی سلیب میں آ گیاجس سے لوگ بہت متاثر ہوئے۔ انہوںنے کہا کہ مقامی گیس پر سبسڈی حکومت کتنی دیر تک دے سکتی ہے۔

انہوںنے کہاکہ ایک زمانے میں منافع بخش کمپنی خسارے میں ہیں۔انہوںنے کہاکہ گزشتہ حکومت نے آخری سال میں 55 ارب روپے کی گیس اسکیم دیں۔ انہوںنے کہاکہ ہم نے پنجاب کی صنعتوں کو 25 ارب روپے کی سبسڈی دی ۔ انہوکںنے کہاکہ ملک کو چلانا ہے کہ عوام کو یہ بوجھ برداشت کرنا ہو گاتاہم آئندہ سال حالات بہتر ہوں گے۔انہوںنے کہا کہ گیس کرائسس کو حل کرنے کیلئے مقامی تیل و گیس کی تلاش تیز کر رہے ہیں۔ انہوںنے کہاکہ مجھے افسوس ہے کہ عوام کیلئے مشکل ہے،جن کے بل 20 ہزار سے زائد ہیں ان کی چار اقساط کی جائیں گی۔ انہوںنے کہاکہ سوئی کمپنیوں کے دفاتر ہفتہ اتوار کو بھی کھلے رہیں گے۔