سندھ ہائیکورٹ نے سانحہ بلدیہ، عزیر بلوچ اور نثار مورائی کی جے آئی ٹیز16فروری کو چیمبر میں پیش کرنے کی ہدایت کردی

ہفتہ فروری 18:55

سندھ ہائیکورٹ نے سانحہ بلدیہ، عزیر بلوچ اور نثار مورائی کی جے آئی ٹیز16فروری ..
کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 02 فروری2019ء) سندھ ہائیکورٹ نے سانحہ بلدیہ، عزیر بلوچ اور نثار مورائی کی جے آئی ٹیز16فروری کو چیمبر میں پیش کرنے کی ہدایت کردی ہے ۔

(جاری ہے)

درخواست گذار وفاقی وزیر علی زیدی نے اپنی درخواست میں موقف اختیار کیا تھا کہ سانحہ بلدیہ، عزیر بلوچ اور نثار مورائی کی جے آئی ٹی عوام سے چھپایا گیا ہے ،سانحہ بلدیہ فیکٹری میں 250 سے زائد اموات ہوئی مگر جے آئی ٹی پبلک نہ ہوئی،عزیر بلوچ اور نثار مورائی کی جے آئی ٹی بھی ابھی تک باقاعدہ پبلک نہیں کی گئی،نثار مورائی نے 7 افراد کے قتل میں ملوث سینئر سیاستدانوں کے نام کا انکشاف کیا،7 افراد کون ہے ان سب کے نام منظر عام پر آنے چائیے،بحیثیت شہری ہمارا حق ہے کہ ہمیں جے آئی ٹی کے متعلق مکمل معلومات حاصل ہو۔

متعلقہ عنوان :