وزیر اعظم عمران خان اور لبنانی وزیر اعظم کی ملاقات کی اندرونی کہانی

سعد الحریری نے دونوں ہاتھ اٹھا کہ کہا شریف خاندان کو معافی دلوانا بہت بڑی غلطی تھی انھوں نے ایک کمٹمنٹ بھی پوری نہیں کی اور مجھے سخت شرمندگی ہوئی،فواد چوہدری

Syed Fakhir Abbas سید فاخر عباس پیر فروری 19:58

وزیر اعظم عمران خان اور لبنانی وزیر اعظم کی ملاقات کی اندرونی کہانی
اسلام آباد(اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار-11 فروری 2019ء) : وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ وزیر اعظم عمران خان سے ملاقات کے دوران لبنانی وزیر اعظم سعد الحریری نے دونوں ہاتھ اٹھا کہ کہا شریف خاندان کو معافی دلوانا بہت بڑی غلطی تھی انھوں نے ایک کمٹمنٹ بھی پوری نہیں کی اور مجھے سخت شرمندگی ہوئی۔ تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم عمران خان گزشتہ روز ایک روزہ دورے پر دبئی پہنچے تھے جہاں انہوں نے اہم ملاقاتوں سمیت ساتوں ورلڈ سمٹ سے خطاب کیا۔

اس سمٹ سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم نے اپنی سیاسی جد وجہد پر بھی روشنی ڈالی ۔جس کو بہت سراہا گیا ۔دوسری جانب وزیر اعظم نے اس دوران اہم ترین شخصیات سے ملاقات کی جن میں آئی ایم ایف کی سربراہ بھی تھیں۔اس کے علاوہ وزیر اعظم عمران خان نے لبنانی وزیر اعظم سعد الحریری سے ملاقات کی ۔

(جاری ہے)

اس ملاقات کے حوالے سے متعلق گفتگو کرتے ہوئے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ آج وزیراعظم کی لبنان کے وزیراعظم سعد حریری سے اچھی نشست ہوئی اور اس حوالے سے بھی تبادلہ خیال ہوا کہ کس طرح دونوں ممالک آپس میں قریب آ سکتے ہیں۔

وزیر خارجہ نے سعد حریری سے ملاقات پر بات کرتے ہوئے کہا کہ انہوں نے بڑے واضح، اچھے انداز اور مسکراتے ہوئے کہا کہ جناب سعد حریری آپ کی اور میری ملاقات ہو رہی ہے لیکن میں آپ کو یہ کہہ دوں کہ پاکستان کو جو این آر او ملے تھے اس کا ہمیں کوئی اچھا تجربہ نہیں ہوا اور کوئی نئے این آر او کا ہمارا ارادہ نہیں اور انہوں نے کہا کہ میں بلکل ایسی غلطی نہیں کروں گا۔

شاہ محمود قریشی نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان نے سعد الحریری کو کو دورہ پاکستان کی دعوت بھی دی ہے۔اس ملاقات کے حوالے سے وزیر اطلاعات و نشریات فواد چوہدری نے بھی ٹوئیٹ کیا ہے۔
انکا کہنا تھا کہ جب وزیر اعظم عمران خان نے سعد الحریری کو واضح انداز میں بتا یا کہ وہ کسی قسم کا این آر او نہیں دیں گے تو اس کے جواب میں لبنانی وزیر اعظم سعد الحریری نے دونوں ہاتھ اٹھا کہ کہا شریف خاندان کو معافی دلوانا بہت بڑی غلطی تھی انھوں نے ایک کمٹمنٹ بھی پوری نہیں کی اور مجھے سخت شرمندگی ہوئی۔