وزیر اعلیٰ پنجاب کو گھر اور دیگر مراعات دینے کی خبریں بے بنیا دہیں؛ بِل میںوزرائے اعلیٰ کیلئے صرف مناسب سکیورٹی کا ذکر ہے : ترجمان

وزیراعظم پاکستان اور وزیراعلیٰ پنجاب نے اراکین اسمبلی کی تنخواہوں میں اضافے پر ناگواری کا اظہار کیا ہے : ڈاکٹر شہباز گل ۱مذکورہ بِل کے مطابق اراکین پنجاب اسمبلی کی بنیادی تنخواہ خیبر پختونخواہ کے اسمبلی ممبران کے برابرکی گئی ۹وزیراعظم کی ہدایت پر پارلیمانی پارٹی تنخواہوں میں اضافے کے فیصلے پر نظر ثانی کرے گی : ترجمان وزیراعلیٰ پنجاب تنخواہوں میں اضافے کا بِل مسلم لیگ (ن)کے ممبر نے پیش کیا : ایوان نے متفقہ طور پر منظور کر لیا : ترجمان وزیراعلیٰ کی پریس کانفرنس

جمعرات مارچ 23:24

وزیر اعلیٰ پنجاب کو گھر اور دیگر مراعات دینے کی خبریں بے بنیا دہیں؛ ..
لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 14 مارچ2019ء) ترجمان وزیر اعلیٰ پنجاب ڈاکٹر شہباز گل نے کہا ہے کہ عمران خان نے 23سال قبل سیاست کاآغاز غریب عوام کے مفادات کے تحفظ کیلئے کیا تھا۔ ہمیں فخر ہے کہ وزیراعظم پاکستان ایسا کوئی قدم نہیں اٹھاتے جو وطن عزیز میں بسنے والے عوام کی امنگوں کے خلاف ہو۔ عمران خان کی محنت اور کوششوں کی بدولت ہی آج ہم سب عوامی ضدمت کیلئے اپنے عہدوں پر موجود ہیں۔

وزیراعظم پاکستان سادگی اور بچت کی پالیسی پر گامزن ہیں اور پنجاب حکومت انہی کے وژن کو آگے بڑھائے گی۔ وزیراعلیٰ پنجاب کو ملنے والی مراعات کے حوالے سے میڈیا پر چلنے والی خبر درست نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب اسمبلی سے اراکین اسمبلی کی تنخواہوں میں اضافے کے بل میں وزیراعلیٰ پنجاب کو خصوصی گھر یا ملازمین سمیت کوئی خاص مراعات شامل نہیں ہیں۔

(جاری ہے)

پنجاب سمبلی سے منظور شدہ بل میں وزیراعلیٰ پنجاب کیلئے صرف مناسب سکیورٹی فراہم کرنے کا ذکر ہے۔ یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ یہ مناسب سکیورٹی بھی 2002کے بعد سے پنجاب کے تمام سابق وزرائے اعلیٰ کو فراہم ہے۔ انہوں نے کہا کہ مزکورہ بل میں تنخواہوں میں اضافے کی تجویز پر وزیراعظم پاکستان اور وزیر اعلی پنجاب نے ناگواری کا اظہار کیا ہے۔ ان خیالات کا اظہار ترجمان وزیراعلیٰ پنجاب ڈاکٹر شہباز گل نے آج یہاں ڈی جی پی آر میں میڈیا کے نمائیندوں سے گفتگومیں کیا۔

ان کا کہنا تھا کہ اس بل کے مطابق اراکین پنجاب اسمبلی کی بنیادی تنخواہ خیبر پختونخواہ کے اسمبلی ممبران کے برابر ہو گئی ہے۔اس سے قبل پنجاب کے ممبران صوبائی اسمبلی کی بنیادی تنخواہ 18ہزار رپے ماہانہ تھی جو ا س بل کی سفارشات کی روشنی میں 80ہزار روپے مہینہ کی گئی ہے۔ ڈاکٹر شہباز گل نے بتا یا کہ اراکین اسمبلی کی تنخواہوں میں اضافے کا بل مسلم لیگ (ن)کے ایک ایم پی اے نے پیش کیاجس کو ایوان نے متفقہ طور پر منظور کر لیا۔

ایک سوال کے جواب میں ترجمان وزیر اعلیٰ پنجاب کا مزید کہنا تھا کہ اسمبلی سے پاس ہونے والا بل گورنر پنجاب کے دستخط کے بعد قانون بن جاتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اسمبلی کے قانون پرتجزیہ ضرور کیا جا سکتا ہے تاہم ایوان کی متفقہ سوچ کو رد نہیں کیا جاسکتا اسی لیے ہماری پارلیمانی پارٹی کے اجلاس میں اسے دوبارہ زیر غور لایا جائے گا۔