زرداری کی مشکلات میں اضافہ‘اویس مظفر ٹپی دبئی سے گرفتار

سرکاری زمین غیر قانونی طور پر فروخت کرنے کا الزام ہے‘جلد پاکستان منتقل کیا جائے گا . ذرائع

Mian Nadeem میاں محمد ندیم منگل اپریل 12:38

زرداری کی مشکلات میں اضافہ‘اویس مظفر ٹپی دبئی سے گرفتار
دوبئی(اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین-انٹرنیشنل پریس ایجنسی۔ 02 اپریل۔2019ء) پاکستان پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری کے قریبی ساتھی اور منہ بولے بھائی اویس مظفر ٹپی کو دبئی میں گرفتار کر لیا گیا اور انہیں جلد پاکستان لایا جائے گا. انٹرنیشنل کرمنل پولیس آرگنائزیشن (انٹرپول) میں موجود ذرائع نے تصدیق کی کہ اویس مظفر ٹپی کو دبئی میں حراست میں لے لیا گیا ہے اور انہیں پاکستان لایا جائے گا.

(جاری ہے)

اویس مظفر ٹپی پر منی لانڈرنگ اور زمینوں پر ناجائز قبضے کرنے کا الزام ہے‘پاکستان پیپلز پارٹی کے دور میں سندھ کے وزیر بلدیات کے منصب پر فائز رہنے والے اویس مظفر ٹپی کے خلاف اگست 2018 میں قومی احتساب بیورو کے ایگزیکٹو بورڈ کو 4 مختلف مقدمات میں تحقیقات شروع کرنے کی منظوری دی گئی تھی. پیپلز پارٹی رہنما پر الزام ہے کہ انہوں نے اختیارات کا ناجائز استعمال کرتے ہوئے ملیر ندی کے قریب سیکڑوں ایکڑ اراضی ناجائز طور پر الاٹ کی جس کی مالیت 33 ارب روپے بنتی ہے.

مقدمے میں ملوث دیگر افراد میں سابق چیف سیکرٹری سندھ راجہ محمد عباس، سندھ لینڈ یوٹیلائزیشن ڈپارٹمنٹ کے سابق سیکریٹریز غلام مصطفیٰ پھ±ل اور غلام عباس سومرو شامل ہیں. دسمبر میں اس وقت کے چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے اویس مظفر ٹپی کو عدالت میں طلب کیا تھا جہاں ان پر شاہ لطیف ٹاﺅن کے رہائشیوں نے متعدد پلاٹوں پر غیرقانونی طور پر قبضے کا الزام عائد کیا تھا.

اس موقع پر ڈی آئی جی ساﺅتھ جاوید اوڈھو نے عدالت کو بتایا تھا کہ اویس مظفر ٹپی گزشتہ تین سال سے بیرون ملک ہیں‘جاوید اوڈھو نے مزید بتایا تھا کہ سپریم کورٹ کے احکامات کی روشنی میں ٹپی کی والدہ کو نوٹس بھیج دیا گیا ہے اور اس سلسلے میں مدد کے لیے ایف آئی اے کو بھی خط تحریر کردیا گیا ہے. سابق وزیر پیٹرولیم اور آصف زرداری کے قریبی ساتھی ڈاکٹر عاصم حسین کا 2016 میں ایک ویڈیو بیان سامنے آیا تھا جس میں وہ اویس مظفر ٹپی پر الزامات عائد کر رہے تھے‘ڈاکٹر عاصم نے الزام عائد کیا تھا کہ پیپلز پارٹی کے دوسرے دور حکومت کے دوران اویس مظفر ٹپی ہی سندھ کے اصل وزیر اعلیٰ تھے اور ہر طرح کی کرپشن میں ملوث رہے.

انہوں نے ویڈیو بیان میں کہا تھا کہ ایک مرتبہ ایک ڈاکٹر نے مجھے بتایا کہ 600روپے والی ویکسین ایک ہزار روپے میں خریدی گئی لیکن بعدازاں اسے ملتان میں بیچ دیا گیا، جب میں نے معاملاے کی تفتیش کی تو یہ الزامات درست ثابت ہوئے. ڈاکٹر عاصم نے کہا کہ میں نے اس بارے میں آصف زرداری سے شکایت کی اور ان سے کہا کہ وہ اویس مظفر ٹپی کو لوگوں کی زندگیوں سے کھیلنے سے روکیں.

ڈاکٹر عاصم نے مزید بتایا کہ آصف علی زرداری سے شکایت پر اویس مظفر ٹپی نے مجھے دھمکی دی کہ ایسا ٹیکہ لگاﺅں گا کہ یاد رکھو گے، میرے خلاف باتیں کرنا اور شکایتیں کرنا چھوڑ دو اور سنگین نتائج کی دھمکیاں بھی دیں. رواں سال 20 فروری کو نیب کراچی نے آ مدن سےزائد اثاثہ جات کیس میں اسی کیس میں شریک ملزم اسپیکرسندھ اسمبلی آغاسراج درانی کوگرفتارکیا تھا‘آغا سراج درانی تاحال نیب کی تحویل میں ہیں اور 12 اپریل تک کا جسمانی ریمانڈ عدالت کی جانب سے دیا جاچکا ہے.

ان سے تفتیش کے دوران حاصل کردہ معلومات کی روشنی میں نجی بینک کے لاکرز کی تلاشی کے دوران تفتیشی ٹیم کو لاکھوں روپے کے غیر ملکی کرنسی نوٹ اور بڑی تعداد میں سونا ملا، نیب نے اسپیکرکے لاکرز سے 55 لاکھ 18 ہزار 744 روپے کی غیر ملکی کرنسی جبکہ 2 کلو 14 گرام سونا برآمد ہوا. آغا سراج درانی کی اہلیہ کے لاکرز سے ایک کلو 9 گرام سونے کے زیورات بھی برآمد کیے‘برآمد ہونے والے سونے کی قیمت 2 کروڑ روپے سے زائد بنتی ہے، قیمت کا تعین کر کے تفصٰل قومی بینک دولت کو بھیج دی جائے گی.