نوازشریف کی حکومت کیخلاف کبھی سیاست نہیں کی، ثاقب نثار

میرے دورمیں جوڈیشل ایکٹیوازم رہا لیکن کبھی بھی دائرہ اختیارسے تجاوزنہیں کیا، ہمیشہ قانون کے دائرے میں رہتے ہوئے اختیار استعمال کیا۔ سابق چیف جسٹس ثاقب نثارکی امریکا میں میڈیا سے گفتگو

sanaullah nagra ثنااللہ ناگرہ اتوار اپریل 21:04

نوازشریف کی حکومت کیخلاف کبھی سیاست نہیں کی، ثاقب نثار
لاہور(اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔07 اپریل 2019ء) سابق چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے واضح کیا کہ عدلیہ نے نوازشریف کی حکومت کیخلاف کبھی سیاست نہیں کی، میرے دورمیں جوڈیشل ایکٹیوازم رہا لیکن کبھی بھی دائرہ اختیارسے تجاوزنہیں کیا، ہمیشہ قانون کے دائرے میں رہتے ہوئے اختیار استعمال کیا۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق سابق چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے امریکی شہر ڈیلاس میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ میرے دور میں جوڈیشل ایکٹیوازم ضرور رہا لیکن میں نے کبھی بھی دائرہ اختیارسے تجاوزنہیں کیا۔

عدلیہ نے جو کیا وہ قانون کے دائرے میں رہتے ہوئے کیا، کبھی بھی عدلیہ سیاست میں نہیں رہی۔ ثاقب نثار نے واضح کیا کہ میرے دور میں سپریم کورٹ نے نوازشریف کی حکومت کےخلاف کوئی سیاست نہیں کی۔

(جاری ہے)

میرے دور کے فیصلوں کو ہر طرح سے دیکھا جا سکتا ہے کہ عدالت نے جو بھی فیصلہ دیا عدالت نے اپنے دائرہ اختیارکواستعمال کیا۔ عدالتی فیصلہ پڑھنے سے تمام سوالوں کا جواب مل جائے گا۔

مزید برآں جرمن میڈیا کو دیئے گئے انٹرویو کے دوران جسٹس(ر) میاں ثاقب نثار نے کہا کہ عدلیہ نے نوازشریف کے خلاف قانون کے مطابق فیصلہ کیا، نوازشریف کی حکومت کے خلاف عدلیہ نے کوئی سیاست نہیں کی، عدالتی فیصلہ پڑھنے سے تمام سوالوں کا جواب مل جائے گا کہ عدلیہ نے اپنا کردار قانون کے دائرے میں رہ کر پورا کیا۔سابق چیف جسٹس نے کہا کہ چند ماہ قبل ڈیم کی آگاہی مہم پر آنے والے اخراجات پر سوالات اٹھائے گئے تھے اور اعتراض کیا گیا کہ اتنے پیسے خرچ کردئیے جس پر سپریم کورٹ کے عملدرآمد بینچ نے اپنے حکم میں اور پیمرا نے بھی واضح کیا کہ پرنٹ اور الیکٹرانک میڈیا کے لائسنس میں شامل شرائط کے تحت پبلک سروس میسج کیلئے متعین وقت میں سے ڈیم فنڈ کی مہم چلائی جارہی ہے۔