اسلام آباد ہائی کورٹ نے داعش سے تعلق کے الزام میں گرفتار طلحہ ہارون کی امریکا حوالگی کے فیصلے کے خلاف درخواست پر فیصلہ محفوظ کر لیا

پیر اپریل 23:27

اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - اے پی پی۔ 08 اپریل2019ء) اسلام آباد ہائی کورٹ نے داعش سے تعلق کے الزام میں گرفتار طلحہ ہارون کی امریکا حوالگی کے فیصلے کے خلاف درخواست پر فیصلہ محفوظ کر لیا ہے۔ امریکہ کی جانب سے طلحہ ہارون کی حوالگی کی درخواست پر تحقیقات کے لئے وزارت داخلہ نے ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر جنرل اسلام آباد کو انکوائری افسر مقرر کیا تھاجنہوں نے 15جنوری 2017 کو طلحہ ہارون کو امریکہ کے حوالے کرنے کا فیصلہ سنایامگر ہائی کورٹ کے حکم امتناع کے باعث ملزم کو امریکا کے حوالے کرنے کی کارروائی روکی گئی۔

(جاری ہے)

پیر کو اسلام آباد ہائی کورٹ کے جسٹس محسن اختر کیانی نے گرفتار طلحہ ہارون کی امریکا حوالگی سے متعلق ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر جنرل کے فیصلے کے خلاف درخواست پر سماعت کی۔ درخواست گزار کے وکیل نے کہا کہ پاکستان نے امریکہ سے جب بھی کوئی مطلوبہ شہری طلب کیا، امریکہ نے دینے سے انکار کیا ، حسین حقانی کی مثال سامنے ہے۔ جسٹس محسن اختر کیانی نے ریمارکس دیئے پاکستان کو ایک ایڈمرل مطلوب تھا جو فراہم کیا گیا۔ فاضل جج کے استفسار پردرخواست گزار کے وکیل نے بتایا کہ طلحہ ہارون کے بہن بھائی امریکہ میں ہی مقیم ہیں۔