Live Updates

فضل الرحمان تیل ڈالیں یا ڈیزل، گاڑی نہیں چلے گی، فواد چودھری

بھئی اب آپ کی گاڑی کا انجن بیٹھ گیا ہے، پیپلزپارٹی نے فاٹا سے سوتیلے والا سلوک کیا، زرداری کبھی اپنے والد کی بھی برسی منالیں، جمہوریت نہیں، ڈاکو خطرے میں ہیں۔ کھیوڑہ میں تقریب سے خطاب

sanaullah nagra ثنااللہ ناگرہ ہفتہ اپریل 18:36

فضل الرحمان تیل ڈالیں یا ڈیزل، گاڑی نہیں چلے گی، فواد چودھری
کھیوڑہ (اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔13 اپریل 2019ء) وفاقی وزیراطلاعات فواد چودھری نے کہا ہے کہ مولانا فضل الرحمن تیل ڈالیں یا ڈیزل اب گاڑی نہیں چلے گی، بھئی اب آپ کی گاڑی کا انجن بیٹھ گیا ہے ،پیپلزپارٹی نے فاٹا سے سوتیلے والا سلوک کیا،زرداری کبھی اپنے والد کی بھی برسی منالیں،جمہوریت نہیں،ڈاکو خطرے میں ہیں۔انہوں نے آج کھیوڑہ میں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کھیوڑا سیاست کا بہت بڑا مرکز ہے۔

نیشنل ایکشن پلان پر عمل درآمدکی ضرورت ہے۔ فاٹا نے بہت سختیاں جھیلی ہیں، لوگوں نے ظلم سہا ہے، ان کیلئے ضروری ہے کہ خصوصی پیکج کا اعلان کریں۔فاٹا کیلئے وزیراعظم نے 100ارب ہر سال اوردس سالوں میں 1000ارب خرچ کریں گے۔وفاق، پنجاب ، خیبرپختونخواہ نے اپنا حصہ کاٹ کرفاٹا کو دیا ہے۔

(جاری ہے)

ہم بلوچستان کو بھی آگے لیکر جائیں گے۔انہوں نے کہا کہ بلاول بھٹو فاٹا کیلئے اسمبلی بڑی بات کرتے تھے لیکن جب پیسے دینے کی باری آئی توبدقسمتی سے پیپلزپارٹی نے فاٹا سے سوتیلے پن کا سلوک رکھا۔

اسی لیے تو اب پیپلزپارٹی بھٹو اور بے نظیر بھٹو کی پارٹی نہیں ہے۔اب پیپلزپارٹی سندھ کی چھوٹی سی پارٹی بن گئی ہے۔ بلاول بھٹو جب کاروان بھٹو کیلئے نکلتے ہیں، تو اپنے والد کی تصویر نہیں لگاتے ، اسی طرح آصف زرداری روزانہ ذوالفقار بھٹو اور بے نظیر کی برسی مناتے ہیں ذوالفقار بھٹو کی تصویر لگاتے ہیں لیکن اپنے والد حاکم کی بھی تصویر لگا لیا کریں۔

انہوں نے کہا کہ دوسرا مسئلہ فضل الرحمن کا ہے کہ ان کو1988ء کے بعد اب اسمبلی سے باہر آئے ہیں، بھئی اب آپ کی گاڑی کا انجن بیٹھ گیا ہے، اس میں ڈیزل ڈالیں یا پٹرول یہ نہیں چلے گی، شہبازشریف کے کارنامے سامنے آرہے ہیں۔ہمارے علاقے میں پنڈدادن کا ایک مزدور ہے پاپڑبیچتا ہے، منظور نام ہے، اس کا شناختی کارڈ استعمال کیا کہ ڈیڑ ھ ارب حمزہ شہباز نے دبئی سے بھیجے ہیں، یہی وجہ ہے کہ پاکستان کا37ارب ڈالر قرضہ تھا،ہم نے ڈیمز بنائیں ،اسلام آباد بنایا، گوادر بنایا، موٹروے بنائی، پچھلے 10سالوں میں انہوں نے 60 ارب ڈالر قرضہ لیا، جب پوچھو توکہتے ہیں کہ جمہوریت خطرے میں ہے۔ لیکن اب جمہوریت خطرے میں نہیں بلکہ ڈاکو خطرے میں ہیں۔ جمہوریت نہیں،ڈاکو خطرے میں ہیں۔
ڈالر تاریخ کی بلند ترین سطح پر سے متعلق تازہ ترین معلومات