بھارت پاکستان میں جارحیت کر سکتا ہے،بلوچستان میں دہشت گردی کے واقعے نے وزیر خارجہ کا بیان سچ ثابت کر دیا

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے نے بیان دیا تھا کہ 16 سے 20 اپریل کے دوران کاروائی کی اطلاعات ہیں اور بھارت پاکستان پر حملہ کر سکتا ہے

Muqadas Farooq مقدس فاروق اعوان جمعرات اپریل 13:14

بھارت پاکستان میں جارحیت کر سکتا ہے،بلوچستان میں دہشت گردی کے واقعے ..
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 18 اپریل2019ء) اوماڑہ میں دہشت گردی کے واقعے نے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا بیان سچ ثابات کر دیا۔وزیر خارجہ نے کچھ روز قبل خدشہ ظاہر کیا تھا کہ بھارت پاکستان میں جارحیت کا مظاہرہ کر سکتا ہے جس کے بعد گذشتہ شب بلوچستان میں دہشت گردی کا ایک واقعہ پیش آیا جس میں 14 افراد کو بسوں سے اتار کر فائرنگ کر کے قتل کر دیا گیا۔

جب کہ وزیر خارجہ نے بیان تھا کہ 16 سے 20 اپریل کے دوران کاروائی کی اطلاعات ہیں۔جب کہ ترجمان دفتر خارجہ نے کہا ہے کہبلوچستان میں ہونے والی دہشت گردی میں بیرونی ہاتھ ملوث ہوا تو سامنے لائیں گے۔ترجمان دفتر خارجہ نے کہا کہ بلوچستان میں اس سے پہلے ہونے والی دہشت گردی میں بھارت ملوث تھا جسے ہم دنیا کے سامنے لائیں گے۔

(جاری ہے)

اور آج بھی اگر کوئی بیرونی ہاتھ ملوث ہو گا تو سامنے لائیں گے، آج بھی جہاں دہشت گردی ہو رہی ہے وہاں سے بھارتی جاسوس کلبھوشن کو پکڑا گیا تھا۔

خیال رہے بلوچستانکے ساحلی علاقے اورماڑہ کے قریب مکران کوسٹل ہائی وے پر ایک بس کے مسافروں پر نامعلوم مسلح ملزمان نے فائرنگ کر دی جس کے نتیجے میں 14 افراد جاں بحق ہو گئے ہیں. ذرائع کے مطابق مسلح ملزمان نے بس سے مسافروں کو شناخت کے بعد اتارا اور ان پرفائرنگ کر دی، واقعے کے بعد ملزمان فرار ہونے میں کامیاب ہو گئے. لیویز ذرائع کے مطابق واقعے کے بعد لیویز اور مقامی پولیس پہنچ گئیں، جنہوں نے علاقے کو گھیرے میں لے لیا اور جاں بحق ہونے والے تمام افراد کی لاشیں اورماڑہ ہسپتال منتقل کی گئی ہیں.یاد رہے کہ 2 فروری کو بلوچستان کے علاقے کیچ میں نامعلوم افراد نے فائرنگ کرکے 5 افراد کو ہلاک کردیا تھا. لیویز حکام کا کہنا تھا کہ زمران کے پہاڑی علاقوں میں لاشوں کی اطلاع ملی جس پر لیویز اہلکار موقع پر پہنچے اور لاشوں کو قبضے میں لے کر ہسپتال منتقل کیا. لیویز حکام کا کہنا تھا کہ ابتدائی تفتیش کے مطابق مارے جانے والے افراد منشیات ڈیلرتھے، جنہیں نامعلوم افراد نے فائرنگ کرکے قتل کیا.