سید خورشید شاہ کا صدارتی نظام لانے کی خبروں پر سخت تشویش کا اظہار

صدارتی نظام لانا ہے تو آئین ختم کر دیں، وزیراعظم آج بھی کنٹینر پر چڑھے ہوئے ہیں، عمران خان سمجھتے ہیں پارلیمنٹ میں کوئی شریف نہیں،چیف سلیکٹر اب اپنی سلیکشن پر سوچ رہے ہوں گے، میڈیا سے گفتگو

جمعرات اپریل 15:19

سید خورشید شاہ کا صدارتی نظام لانے کی خبروں پر سخت تشویش کا اظہار
سکھر (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 18 اپریل2019ء) پاکستان پیپلز پارٹی کے سینئر رہنما سید خورشید شاہ نے صدارتی نظام لانے کی خبروں پر سخت تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہاہے کہ صدارتی نظام لانا ہے تو آئین ختم کر دیں، وزیراعظم آج بھی کنٹینر پر چڑھے ہوئے ہیں، عمران خان سمجھتے ہیں پارلیمنٹ میں کوئی شریف نہیں،چیف سلیکٹر اب اپنی سلیکشن پر سوچ رہے ہوں گے۔

(جاری ہے)

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے پیپلزپارٹی کے رہنما خورشید شاہ نے کہاکہ سندھ میں ترقیاتی کام بند ہوگئے، اٹھارویں ترمیم میں این ایف سی کی بات ہوئی، ایف بی آر کے ٹارگٹ پورے نہیں ہو رہے، ہم نے ٹارگٹ سے بڑھ کر 1945 بلین ٹیکس وصول کیا۔خورشید شاہ نے کہا کہ حکومت کو کئی بار مل بیٹھ کر بات کرنے کی دعوت دی، وزیراعظم آج بھی کنٹینر پر چڑھے ہوئے ہیں۔ انہوںنے کہاکہ پنجاب میں 3 آئی جیز کی تبدیلی گڈ گورننس کی نشانی ہے چیف سلیکٹر سے سلیکشن میں غلطی ہوگئی ہے، چیف سلیکٹر اب اپنی سلیکشن پر سوچ رہے ہوں گے۔