احتساب عدالت نے اومنی گروپ کے ملزم محمدعارف اورمحمد عمیر کو دس روزہ جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے کردیا

جمعرات اپریل 16:16

احتساب عدالت نے اومنی گروپ کے ملزم محمدعارف اورمحمد عمیر کو دس روزہ ..
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 18 اپریل2019ء) اسلام آباد کی احتساب عدالت نے اومنی گروپ کے ملزم محمدعارف اورمحمد عمیر کو دس روزہ جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے کردیا ۔ جمعرات کو احتساب عدالت میں جعلی اکاؤنٹس کیس میں اومنی گروپ کے ملزم محمدعارف اورمحمد عمیر عدالت پیش ہوئے ۔ ملزمان کو جج محمد ارشد ملک کی عدالت میں پیش کیاگیا ۔

دور ان سماعت انویسٹی گیشن افسر نے عدالت میں پیش کرنے کے لئے کوئی ریکارڈ نہیں دیا ۔ وکیل ملزم نے کہاکہ سپریم کورٹ، بنکنگ کورٹ اور سندھ ہائی کورٹ کے ریکارڈ کے علاؤہ اور کیا لانا ہے ۔نیب نے ملزمان کے جسمانی ریمانڈ کی استدعا کی ۔ملزمان کے وکیل نے جسمانی ریمانڈ کی مخالفت کرتے ہوئے کہاکہ نیب نے میرے موکل عمیر کو بلاوجہ گرفتار کیا ہے۔

(جاری ہے)

انہوںنے کہاکہ نیب نے عمیر کو 5 اپریل کو ائیرپورٹ سے گرفتار کرلیا ہے۔ جج نے نیب کا پراسیکیوٹر سے استفسار کیا کہ سن لیں شاید آپ کے لئے کچھ نکل آئے۔نیب پراسیکیوٹر نے کہاکہ ملزمان سے تحقیقات جاری ہیں مزید دستاویزات حاصل کرنی ہیں۔نیب پراسیکیوٹر نے استدعا کی کہ ملزمان کا مزید جسمانی ریمانڈ دیا جائے ۔نیب نے کورٹ میں ملزمان کی سفری دستاویزات جمع کرادی۔ ملزمان نے فیملی سے ملنے کی استدعا کی جس پر عدالت نے ملزمان کو فیملی سے ملاقات کی اجازت دے دی۔ دوران سماعت نیب نے ملزمان کی 14 روزہ جسمانی ریمانڈ کی استدعا کی جس پر عدالت نے 14 روزہ جسمانی ریمانڈ کی استدعا مستردکرتے ہوئے ملزمان کا 10 روزہ جسمانی ریمانڈ منظورکرلیا ۔ بعد ازاں کیس کی سماعت 29 اپریل تک ملتوی کر دی ۔