سندھ ہائیکورٹ نے لاپتہ افراد کی بازیابی سے متعلق درخواستوں پر ایس ایس پی سی ٹی ڈی سے رپورٹ طلب کرلی

جمعرات اپریل 16:47

سندھ ہائیکورٹ نے لاپتہ افراد کی بازیابی سے متعلق درخواستوں پر ایس ایس ..
کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 18 اپریل2019ء) سندھ ہائیکورٹ نے لاپتہ افراد کی بازیابی سے متعلق درخواستوں پر ایس ایس پی سی ٹی ڈی سے رپورٹ طلب کرلی ہے ۔

(جاری ہے)

جمعرات کو پولیس اہلکاروں سمیت 80 سے زائد لاپتا افرادکی کی بازیابی سے متعلق درخواستوں کی سماعت سندھ ہائی کورٹ میں ہوئی دوران سماعت عدالت نے سیکرٹری داخلہ پر برہمی کا اظہار کیا جسٹس نعمت اللہ پھلپوٹو کا کہنا تھا کہ سیکرٹری داخلہ سندھ کو جاکر بتائیں اب پولیس اہلکار بھی لاپتا ہورہے ہیں،سندھ میں سیکرٹری داخلہ کی کارکردگی صفر ہے،کیا اسطرح صوبہ چلتا ہی لوگ لاپتا ہورہے ہیں ان کو کوئی ہی فکر نہیں،کیوں نہ سیکرٹری داخلہ کو شوکاز نوٹس جاری کردیا جائے،لاپتا افراد کے معاملے پر کسی کو کوئی احساس نہیں،پولیس افسران کے بیان کو عدالت نظر انداز نہیں کرسکتی،پولیس افسران اور تفتشی افسر جان بوجھ کر بھی لاپتا افراد کے کیس کو التوا کا شکار کرتے ہیں، لاپتہ خاتون کا عدالت میں کہنا تھا کہ بیٹا نور محمد سات سال سے لاپتا ہے، عدالتوں کے چکر لگا رہے ہیں،روتے ہوئے خاتون نے بتایا کہ میرا اب کوئی اور سہارا نہیں، بیٹا بازیاب کرایا جائے،عدالت نے ایس ایس پی سی ٹی ڈی سے رپورٹ طلب کرلی، عدالت لاپتا پولیس اہلکار زبیر کی گمشدگی کا مقدمہ درج کرنے کا حکم دے دیا،پولیس، رینجرز، اور دیگر ادارے لاپتا افراد کی بازیابی کے لیے ماڈل ڈیوائسز کا استعمال کریں،عدالت 22 مئی کو متعلقہ اداروں سے پیش رفت رپورٹ طلب کرلی