اسلام آباد ہائی کورٹ میں العزیزیہ ریفرنس میں سابق وزیر اعظم محمد نواز شریف کی سزا کیخلاف اپیل پر سماعت ،

نواز شریف کی حاضری سے استثنٰی کی درخواست منظور پیپر بک کی درستگی کے بعد کارروائی آگے بڑھائی جائے گی،اسلام آباد ہائی کورٹ

منگل اپریل 18:17

اسلام آباد ہائی کورٹ میں العزیزیہ ریفرنس میں سابق وزیر اعظم محمد نواز ..
اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - اے پی پی۔ 23 اپریل2019ء) اسلام آباد ہائی کورٹ نے العزیزیہ اسٹیل ملز ریفرنس میں سابق وزیر اعظم محمد نواز شریف کی سزا کیخلاف اپیل پر سماعت 9مئی تک ملتوی کر تے ہوئے محمد نواز شریف کی حاضری سے استثنٰی کی درخواست منظور کر لی ہے۔ منگل کو عدالت عالیہ کے جسٹس عامر فاروق اور جسٹس محسن اختر کیانی پر مشتمل ڈویژن بینچ نے محمد نوازشریف کی اپیل پر سماعت کی ۔

دوران سماعت محمد نواز شریف کے وکیل نے پیپربک میں کچھ دستاویزات نہ ہونے کی نشاندہی کی۔اسلام آباد ہائی کورٹ نے پیپر بک کی درستگی کے بعد کارروائی آگے بڑھانے کا فیصلہ کیا۔ دوران سماعت محمد نوازشریف کے وکیل خواجہ حارث پیش ہوئے۔عدالت نے سابق وزیراعظم کی حاضری سے استثنیٰ کی درخواست منظورکرلی۔

(جاری ہے)

دوران سماعت خواجہ حارث نے بتایا کہ پیپر بک مل گئی لیکن مکمل نہیں۔

جو دستاویزات لگائی جانی چاہئیں تھیں وہ نہیں لگائی گئیں۔جو پارٹ ون ہمیں دیا گیا وہ کوئی اور ہے اور جوعدالت کو دیا گیا وہ کوئی اورکچھ اکائونٹس کی تفصیلات بھی پیپربک کے ساتھ نہیںدستاویزات کیوں غائب ہیں یہ نہیں پتہ ہے ۔دوران سماعت فاضل جسٹس عامر فاروق نے ریمارکس دیئے کہ برانچ کو بلا کر پوچھ لیتے ہیں ایسا کیوں ہوا جو بھی ریکارڈ برانچ کے پاس آیا ہوگااس نے اسی کی کاپی کرائی ہوگی ۔عدالت نے سماعت 9 مئی تک ملتوی کرتے ہوئے کہا کہ اسی دن دیکھ لیں گے پیپربک درست ہوجائے تو کارروائی آگے چلائیں گے۔