مسیحا ہی جب قاتل بن جائیں گے تو درد کا مداواہ کون کرے گا، مصطفی کمال

منگل اپریل 18:36

مسیحا ہی جب قاتل بن جائیں گے تو درد کا مداواہ کون کرے گا، مصطفی کمال
کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 23 اپریل2019ء) پاک سر زمین پارٹی کے چیئرمین مصطفی کمال نے کراچی کے سرکاری اسپتال میں دانت کے درد کی تکلیف میں آنے والی معصوم لڑکی عصمت جونیجو کا زیادتی کر کے قتل کرنے کی سخت ترین الفاظ میں مزمت کرتے ہوئے وزیر اعلی سندھ سے مطالبہ کیا ہے کہ اس افسوس ناک سنگین واقعہ کی اعلی تحقیقات کروائی جائیں واقعہ میں ملوث عناصر کسی بھی رعایت کے مستحق نہیں ہے ۔

اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ کہ ڈاکٹر معاشرے میں خصوصی اہمیت رکھتے ہیں۔ انہیں اپنے معزز اورباوقار پیشہ کے ساتھ انصاف کرناچاہئیے اوربغیر کسی لالچ وکاروبار کے انسانیت کی خدمت کرنی چاہئیے۔ انہوں نے کہا کہ مسلسل ڈاکٹروں کی غفلت کے باعث معصوم بچوں کی اموات اورمعصوم لڑکی عصمت جونیجو زیادتی کے بعد کرنا کا واقعہ تشویشناک عمل ہے اور اس طرح کے واقعات مسلسل غلط اس معزز پیشہ نہ صرف بدنام کررہا ہے انہوں نے کہا کہ عصمت کے ساتھ سرکاری اسپتال میں کی جانے والی زیادتی اور قتل اس بات کا واضح ثبوت ہے کہ سندھ حکومت صوبے کی عوام کی جان و مال عزت آبرو کے تحفظ میں مکمل طور پر ناکام ہوچکی ہے ۔

(جاری ہے)

حکومت صوبے کی عوام پر رحم کرتے ہوئے حکمرانی سے خود دستبردار ہوجائے انہوں نیمعصوم لڑکی عصمت جونیجو کے والدین سے دلی تعزیت وہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے انہیں صبرِ تلقینِ کی اور کہاکہ پی ایس پی ایک کارکن دکھ کی اس گھڑی آپ کے غم میں برابر کے شریک ہیں انہوں نے وزیر اعلی سندھ دیگر اعلی حکام سے مطالبہ کیا کہ معصوم لڑکی عصمت جونیجوکے والدین کو انصاف فراہم کیا جائے اس میں ملوث ڈاکٹروں کے خلاف سخت سے سخت سزا دی جائے