Live Updates

ایران میں بیان ، وزیراعظم پر آرٹیکل 6 لگنا چاہیے، سید خورشید شاہ

وزارت عظمی لے کر مودی سے دوستی کرنی تھی جس کیلئے 6 ،6 فون مودی کو کرتا ہے اور کہتا ہے مودی جواب نہیں دیتا، رہنما پیپلز پارٹی

جمعرات اپریل 00:09

ایران میں بیان ، وزیراعظم پر آرٹیکل 6 لگنا چاہیے، سید خورشید شاہ
اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 24 اپریل2019ء) پیپلز پارٹی کے رہنما خورشید شاہ نے کہا ہے کہ وزیراعظم پر آرٹیکل 6 لگنا چاہیے۔ بدھ کو قومی اسمبلی میں اظہار خیال کرتے ہوئے پیپلز پارٹی کے رہنما خورشید شاہ نے ایران میں دہشت گردی سے متعلق بیان پر وزیراعظم عمران خان کو کڑی تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ وزیراعظم عمران خان پر آرٹیکل 6 کے تحت سنگین غداری کا مقدمہ چلنا چاہیے، انہوں نے ایران میں جاکر تسلیم کیا کہ ہماری سرزمین سے دہشت گرد جاکر حملہ کرتے ہیں، انہوں نے وہ بات کہی جو آج تک کسی نے نہیں کی تھی، ان پر آرٹیکل 6 لگنا چاہیے، عمران خان کو ایران میں جاکر یہ کہنا چاہیے تھا کہ ایران سے دہشت گرد آئے اور ہمارے 14 جوانوں کو شہید کرکے چلے گئے۔

خورشید شاہ نے کہا کہ خدا کو مانو اور رحم کرو تم لوگ پاکستانی ہو، خود کہتے ہو کہ 6 بار مودی کو فون کیا لیکن وہ بات کرنے کیلئے تیار نہیں، آپ پاکستان اور مسلمانوں کے دشمن مودی کے جیتنے کی دعا کرتے ہو، پاکستان کا وزیراعظم غیرت مند ہوتا ہے جو بھارت و مودی کے آگے نہیں جھک سکتا۔

(جاری ہے)

وومن کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے خورشید شاہ نے کہاکہ ہم اس حلقے میں کھڑے ہیں جہاں سے تبدیلی سرکار نے انتخاب لڑا تھا ، انہوںنے کہاکہ یہ حلقہ آج ماضی سے زیادہ مشکلات کا شکار ہے ۔

انہوںنے کہاکہ پاکستان پیپلز پارٹی انسانیت کی خدمت پر یقین رکھتی ہے ۔ انہوںنے کہاکہ کسی نے اس ملک کی غریب خواتین کے بارے نہیں سوچا ۔ انہوںنے کہاکہ ہم نے بینظیر انکم سپورٹ پروگرام شروع کیا ، انہوںنے کہاکہ یہ واحد حکومت ہے جس نے آٹھ ماہ میں 8 ارب ڈالر قرض لیا ہے ۔ انہوںنے کہاکہ عوام کی خوشحالی ہی معیشت کی خوشحالی ہے ۔ انہوںنے کہاکہ ادویات کی قیمتیں بھی پہنچ سے باہر ہو چکی ہیں ۔

انہوںنے کہاکہ آج کوئی چولہا نہیں جلاتا کہ اضافی بل آ جائیں گے۔ انہوںنے کہاکہ جسکا 2013 میں 300 روپے بل آتا تھا آج اسکا بل 3 ہزار روپے آتا ہے ۔انہوںنے کہاکہ ڈالر 70 سے بڑھا کر 150 تک لے گیا کیا یہ تبدیلی نہیں ہے ،پٹرول کی قیمت 70 سے 120 روپے ہو گئی یہ تبدیلی نہیں ہے ،ایک کروڑ نوکریاں چھین کر 50 لاکھ دے گا کیا یہ تبدیلی نہیں ہے ،جن لوگوں نے اس کو وزارت عظمی دی ہے اس پر وہ خوش ہے ،اس نے کہا تھا کہ میں کبھی پارلیمنٹ میں آوں گا تو سوالات کے جوابات دوں گا ۔

انہوںنے کہاکہ اس ملک کے لوگ جلدی سمجھ گئے ہیں کہ تبدیلی سرکار کیا ہے ،تبدیلی سرکار کا اصل مقصد کنٹینر پر چڑھ کر وزارت عظمی لینی تھی ،وزارت عظمی لے کر مودی سے دوستی کرنی تھی جس کے لئے 6 ،6 فون مودی کو کرتا ہے اور کہتا ہے کہ مودی جواب نہیں دیتا۔
ڈالر تاریخ کی بلند ترین سطح پر سے متعلق تازہ ترین معلومات