متحدہ عرب امارات میں موبائل فون ریپرنگ والے بلیک میلنگ پر اُتر آئے

مخصوص سافٹ ویئرز کے ذریعے موبائل سے ڈیلیٹ تصویریں اور ویڈیوز ریکور کر لی جاتی ہیں

Muhammad Irfan محمد عرفان جمعرات اپریل 11:38

متحدہ عرب امارات میں موبائل فون ریپرنگ والے بلیک میلنگ پر اُتر آئے
شارجہ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین،25 اپریل 2019ئ) شارجہ پولیس کی جانب سے عوام کو خبردار کیا گیا ہے کہ وہ اپنے موبائل فونز فروخت کرنے سے پہلے اُنہیں ری سیٹ کر دیا کریں۔ کیونکہ شارجہ اوردیگر اماراتی ریاستوں میں کئی موبائل فون دُکاندار لوگوں کے موبائل سے ڈیلیٹ شُدہ نجی تصویریں اور ویڈیوز ریکور کر کے اُنہیں بلیک میلنگ پر اُتر آئے ہیں اور اس کے بدلے میں اُن سے رقم طلب کی جاتی ہے۔

شارجہ پولیس کے مطابق کئی مجرمانہ ذہنیت کے دُکاندار کسی گاہک سے موبائل فون خریدنے کے بعد پہلا کام ہی یہی کرتے ہیں کہ اُس پر ڈیٹا ریکوری کا سافٹ ویئر چلا دیتے ہیں، جس میں ان گاہکوں کی نجی نوعیت کی تصاویر اور ویڈیوز برآمد ہوتی ہیں۔ جس کی آڑ میں یہ لوگ اُس گاہک کو بلیک میل کرنا شروع کر دیتے ہیں۔

(جاری ہے)

اکثر گاہک بلیک میلر دُکانداروں کی دھمکی سے مجبور ہو کر اُنہیں ایک بار رقم فراہم کر دیتا ہے تو یہ ڈھیٹ دُکاندار دوبارہ اُن سے رقم کا تقاضا کرتے ہیں جس سے گاہک کی زندگی اجیرن ہو جاتی ہے۔

اگر عوام موبائل فروخت کرنے سے پہلے اُسے فیکٹری ری سیٹ کر دیں اور اس میں موجود ای میلز ڈیلیٹ کر دیں تو اُنہیں اس طرح کی بلیک میلنگ کا سامنا نہیں کرنا پڑے گا۔ شارجہ پولیس کے مطابق ہر ماہ بلیک میلنگ سے متعلق اوسطاً 21 کیسز درج کیے جاتے ہیں جن میں سے 19 کیسز دُکانداروں کی جانب سے موبائل صارف کو بلیک میلنگ سے متعلق ہوتے ہیں۔ گزشتہ دِنوں ایک خاتون کی جانب سے بھی شکایت درج کرائی گئی تھی کہ ایک موبائل سیلزمین نے اُسے دھمکی دی تھی کہ اگر اُس نے اُسے 10 ہزار درہم نہ دیئے تو وہ اُس کی انتہائی نجی نوعیت کی تصاویر سوشل میڈیا پر شیئر کر دے گا۔