رمضان المبارک کے دوران سعودی ائمہ کرام35 ممالک کو روانہ کیے جائیں گے

یہ ائمہ کرام تبلیغ کے ساتھ ساتھ اسلام کی اعتدال پسند تعلیمات سے بھی رُوشناس کروائیں گے

Muhammad Irfan محمد عرفان جمعرات اپریل 13:41

رمضان المبارک کے دوران سعودی ائمہ کرام35 ممالک کو روانہ کیے جائیں گے
مکّہ معظمہ( اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین،25 اپریل 2019ئ) سعودی وزارت برائے اسلامی امور کے جانب سے 70 ائمہ کرام کو دُنیا کے مختلف ممالک میں بھجوانے کی منظوری دے دی گئی ہے۔ یہ امام رمضان المبارک کے دوران دُنیا کے 35 ممالک میں جا کر تراویح اورتہجد پڑھائیں گے۔ اس کے ساتھ ساتھ اسلام کی اعتدال پسند تعلیمات کو بھی اُجاگر کریں گے۔ اسلامی وزارت کی جانب سے رمضان المبارک کے دوران ہر سال درجنوں ائمہ کرام کو مختلف ممالک میں دینی خدمت کی غرض سے بھیجا جاتا ہے۔

یہ ائمہ کرام فرزندانِ توحید کو شعائرِ اسلام سے آگاہ کرنے کے علاوہ انتہا پسندی سے دُور رہنے کا پرچار بھی کریں گے۔ وزارت کے ترجمان کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ ان ائمہ کرام کا انتخاب مملکت بھر میں واقع مختلف شریعہ کالجز سے کیا گیا ہے۔

(جاری ہے)

جو حافظ ہونے کے علاوہ اسلامی فقہی امور پر بھی گہری دسترس رکھتے ہیں۔ ترجمان نے مزید کہا کہ رمضان کے دوران دُنیا بھر میں مساجد نمازیوں سے کھچا کھچ بھری ہوتی ہیں، سو اس سنہرے موقع سے فائدہ اُٹھانے کی غرض سے سعودی مملکت کی جانب سے ائمہ کرام کو اُمتِ مسلمہ کی رہنمائی اور اُن کے ایمان کو مضبوط بنانے کی غرض سے روانہ کیا جاتا ہے۔

یہ ائمہ کرام ایک طرف اسلام کا اعتدال پسندی کا پیغام پھیلاتے ہیں تو دُوسری جانب سعودی مملکت اور دُنیا بھر کے مسلمانوں کے درمیان بھائی چارے کو مزید مضبوطی بخشتے ہیں۔ ان ائمہ کرام کو تبلیغ اسلام کے لیے بہترین طریقوں سے آگاہ کرنے کے لیے ایک ورکشاپ کا اہتمام بھی کیا گیا۔

متعلقہ عنوان :