سپریم کورٹ میں محمد نواز شریف کی مستقل ضمانت کیلئے درخواست دائر

جمعرات اپریل 20:22

سپریم کورٹ میں محمد نواز شریف کی مستقل ضمانت کیلئے درخواست دائر
اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - اے پی پی۔ 25 اپریل2019ء) سپریم کورٹ میں سابق وزیراعظم میاں محمد نواز شریف کی مستقل ضمانت کیلئے درخواست دائر کردی گئی ہے جس میں موقف اپنایا گیا ہے کہ عدالت کی جانب سے میاں نواز شریف کوچھ ہفتوں کی ضمانت دی گئی ہے لیکن چھ ہفتوں میں ان کی مکمل صحتیابی ناممکن ہے، اس لئے ان کومستقل ضمانت دینے کے ساتھ محض پاکستان میں علاج کرانے کے فیصلے پر بھی نظر ثانی کی جائے۔

جمعرات کومیاں نواز شریف کی العزیزیہ ریفرنس میں سنائی گئی سزا کے بعد طبی بنیادوں پرچھ ہفتے کیلئے ضمانت پررہائی کے فیصلے کے خلاف نظر ثانی کی اپیل سابق وزیراعظم کے وکیل خواجہ حارث نے دائر کی جس کے ساتھ نواز شریف کی تمام میڈیکل ہسٹری بھی منسلک فراہم کی گئی ہے جس میں استدعاکی گئی ہے کہ میاں نواز شریف کو مستقل بنیادوں پر ضمانت دی جائے۔

(جاری ہے)

اپیل میں کہا گیا ہے کہ نواز شریف کی خواہش ہے کہ وہ برطانیہ میں ا پنا علاج کرائیں کیونکہ پاکستان، برطانیہ، امریکہ اور سوئٹزرلینڈ کے طبی ماہرین کے مطابق نواز شریف کی زندگی کو سنگین خطرات لاحق ہیں۔ اپیل میں کہا گیا ہے کہ عدالتی حکم میں کہا گیاہے کہ نواز شریف ملک چھوڑ کر نہیں جاسکتے لیکن حقیقت میں میاں نواز شریف کا علاج اسی ڈاکٹر سے ممکن ہے جس نے برطانیہ میں ان کا علاج کیا تھا۔ اس لئے استدعا ہے کہ مستقل ضمانت کے ساتھ میاں نوازشریف کو پاکستان میں علاج کے لئے پابند کرنے کے فیصلے پر بھی نظر ثانی کی جائے ۔