Live Updates

قبائلی اضلاع کی ترقی کے لئے دس سالہ منصوبے پر کام جاری ہے ، وزیراعلی خیبرپختونخوا

منصوبے کے تحت قبائلی اضلاع کو ملنے والے سالانہ ایک سو دس ارب روپے کے بجٹ سے یہاں بجلی، پانی، صحت اور تعلیم سمیت تمام بنیادی مسائل حل ہو جائیں گے، قبائلی جرگے سے خطاب

جمعرات اپریل 23:16

کوہاٹ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 25 اپریل2019ء) وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا محمود خان نے کہا ہے کہ قبائلی اضلاع کی ترقی کے لئے دس سالہ منصوبے پر کام جاری ہے اور اس منصوبے کے تحت قبائلی اضلاع کو ملنے والے سالانہ ایک سو دس ارب روپے کے بجٹ سے یہاں بجلی، پانی، صحت اور تعلیم سمیت تمام بنیادی مسائل حل ہو جائیں گے۔جمعرات کے روز قبائلی ضلع کرم کے صدر مقام پارہ چنار کے ایک روزہ دورے کے موقع پر قبائلی جرگہ سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پاراچنار ائر پورٹ کی توسیع اور پروازیں شروع کرنے کی کوشش کی جائے گی۔

وزیراعلی نے ضلع کرم میں میڈیکل کالج کے قیام اور ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال پارہ چنار کو اپ گریڈ کرنے کا اعلان کیا اور کہا کہ قبائلی اضلاع میں خالی آسامیوں پر مقامی نوجوانوں کو تعینات کیا جائے گا۔

(جاری ہے)

محمود خان نے ضلع کرم میں تھری جی اور فور جی کا ذکرکرتے ہوئے دیگر قبائلی اضلاع کی طرح ضلع کرم میں بھی تھری جی اور فور جی سروس بحال کرنے کا اعلان کیا۔

وزیر اعلیٰ نے کہا کہ عمران خان قبائلی اضلاع کی تیز تر ترقی چاہتے ہیں اور عنقریب وہ ضلع کرم کا بھی دورہ کریں گے۔قبائلی جرگہ سے وزیر اعلیٰ کے مشیر اجمل وزیر نے بھی خطاب کیا۔ اس موقع پر وزیر اعظم کے مشیر افتخار درانی ، کمشنر کوہاٹ سید جبار شاہ ، ڈی آئی جی کوہاٹ بھی ان کے ہمراہ تھے جبکہ سینیٹر سجاد طوری اور ایم این اے ساجد طوری کے علاؤہ پی ٹی آئی ضلع کرم کے سید اقبال میاں اور پاک آرمی کے بریگیڈیئر اختر علیم بھی جرگہ میں موجود تھے۔

قبل ازیں وزیر اعلیٰ نے ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال پاراچنار کا دورہ کیا اور نئے قائم ہونے والے ٹراما سنٹر کا معائنہ کیا اور لوگوں کو صحت کارڈ تقسیم کرتے ہوئے ضلع کرم میں صحت کارڈ کے اجراء کا آغاز کیا۔ وزیر اعلی محمود خان نے گورنر کاٹیج پاراچنار میں دیار کا پودا بھی لگایا۔ واضح رہے کہ کسی وزیراعلی کا قبائلی ضلع کرم کا یہ پہلا سرکاری دورہ تھا۔
وزیراعظم کا دورہ امریکہ سے متعلق تازہ ترین معلومات