وفاقی وزارتِ مذہبی امور نے ملک میں ایک ساتھ رمضان کے آغاز کے لیے صوبوں سے قانونی حمایت مانگ لی

ملک بھر میں ایک ہی دن رمضان کے آغاز کے لیے وزارتِ مذہبی امور نے صوبائی اسمبلیوں میں قراردادیں منظور کروانے کے لیے کوششیں تیز کر دیں

Usman Khadim Kamboh عثمان خادم کمبوہ جمعہ اپریل 00:31

وفاقی وزارتِ مذہبی امور نے ملک میں ایک ساتھ رمضان کے آغاز کے لیے صوبوں ..
اسلام آباد(اردوپوائنٹ اخبار تازہ ترین۔25اپریل2019ء) وفاقی وزارتِ مذہبی امورنے ملک بھر میں رمضان المبارک اور عید ایک ہی دن کروانے کے لیے صوبائی سطح پر رابطے شروع کردیے تاکہ اس حوالے سے مسودے کے حق میں قراردادیں صوبائی اسمبلیوں میں منظور کروائی جائیں اور پھر تیار کردہ مسودہ وفاقی کابینہ سے منظور کروا کے اسے قانونی شکل دی جاسکے۔وفاقی وزارتِ مذہبی اموراس سال بھی عیداور رمضان المبارک ملک بھر میں ایک ساتھ منانے کے لیے سرگرم ہوگئی ہے اور وزارت نے صوبوں سے قانونی حمایت مانگتے ہوئے مسودہ بھی تیار کر لیا ہے۔

وزارتِ مذہبی امور برائے مذہبی بین ہم آہنگی نے رویت ہلال سے متعلق نئی قانون سازی کا مسودہ تیار کرلیا جس میں کہا گیا ہے کہ ریاست کے دستور کے تحت چاند کے دیکھے جانے یا نہ دیکھے جانے کے حوالے سے فیصلے کے لیے صوبائی اسمبلیوں سے قرارداد کی منظوری ضروری ہے۔

(جاری ہے)

اس مسودے میں کہا گیا ہے کہ سندھ اسمبلی پہلے ہی قانون سازی کے حق میں قرارداد منظور کرچکی ہے اور دیگر صوبائی اسمبلیوں کو اب اس پر عمل درآمد کرنے کی ضرورت ہے ۔

ذرائع کے مطابق وفاقی وزیر مذہبی امور پیر نور الحق قادری نے مسودے کی حمایت کے لیے باقی صوبوں کے وزرائے اعلیٰ کو خطوط جاری دیے ہیں۔ صوبوں کی حمایت کے بعد رویت ہلال سے متعلق بل کا مسودہ منظوری کے لیے وفاقی کابینہ کو بھیجا جائے گا۔یاد رہے کہ1440 ہجری رمضان المبارک کا چاند دیکھنے کے لیے رویت ہلاک کمیٹی نے 5 مئی کو اجلاس طلب کیا ہے، اگر اس اجلاس میں چاند نظر آگیا تو پہلا روزہ 6 مئی کو ہو گاورنہ پہلا روزہ7 مئی کو ہوگا۔