شہباز شریف لندن میں کس شخص سے ملاقات کر رہے ہیں

ڈیل یا ڈھیل شہباز شریف سے ملنے والا شخص شریف خاندان کی کیا مدد کرسکتا ہے؟

Sajjad Qadir سجاد قادر بدھ مئی 07:24

شہباز شریف لندن میں کس شخص سے ملاقات کر رہے ہیں
لاہور ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 15 مئی2019ء)   نواز شریف چھے ہفتے کھلی فضا میں گزارنے کے بعد ایک مرتبہ پھر اڈیالہ جیل پہنچ چکے ہیں جبکہ شہباز شریف صاحب لندن گئے تھے اور تب سے اب تک وہیں پر ہیں۔انہوں نے کئی بار وطن واپس آنے کی تاریخ دی مگر پھر معاملہ گول ہو گیااور اس وقت شہباز شریف کی وطن واپسی کی تاریخ سے متعلق یہی کہا جا رہا ہے کہ انہوں نے اسمبلی میں بجٹ پیش ہونے کے وقت شمولیت کرنی ہے۔

شہباز شریف صاحب جب سے لندن گئے ہیں ہر دوسرے تیسرے ان کی کوئی ویڈیو یا فوٹو ضرور دیکھنے کو مل جاتی ہے۔ان سبھی ویڈیوز میں وہ ریستورانوں اور کافی شاپ کے علاوہ شاپنگ مالز میں گھومتے پائے جاتے ہیں۔شاپنگ مال میں گھومنے والی ویڈیوز دیکھ کر سمجھ نہیں آتی کہ ایسی کون سی شاپنگ ہے جوختم ہی نہیں ہورہی۔

(جاری ہے)

تاہم گزشتہ روز سامنے آنے والی ویڈیومیں ساری کہانی سامنے آ گئی۔

اس ویڈیومیں شہباز شریف ایک کافی شاپ کے باہر کسی آشنا ساتھی کے ساتھ گفتگو میں مصروف ہیں۔کافی کے کش لینے کے ساتھ ساتھ بات چیت کا سلسلہ بھی جاری ہے تاہم ان کے چہرے پر سنجیدگی کے آثار نمایاں ہیں۔میڈیا میں اس ویڈیو پر کیے جانے والے تبصرہ میں یہ کہا جا رہا ہے کہ شہباز شریف کے ساتھ بیٹھا ہوا دوسرا شخص سابق چیف جسٹس پاکستان جسٹس خلیل الرحمان رمدے کا بیٹا مصطفیٰ رمدے ہے جو کہ اس وقت ایڈووکیٹ جنرل آف پاکستان کے عہدے پر موجود ہے۔

کچھ تبصرہ نگار یہ بھی دعویٰ کرتے پائے جا رہے ہیں کہ اس موقع پر شہباز شریف صاحب نے مصطفیٰ رمدے کو ایک بیگ میں گفٹ بھی پیش کیا ہے کہ جب وہ کافی پی کر وہاں سے اٹھے تو جاتے وقت ان کے ہاتھ میں ایک شاپنگ بیگ بھی تھا۔ تاہم اس ویڈیو کی پراسرار کہانی ابھی مکمل طور پر سامنے نہیں آ سکی مگر یہ تو واضح ہوگیا ہے کہ اتنے لمبے عرصے کا لندن قیام ڈیل یا ڈھیل یا پھر اس کے علاوہ کسی اور صورت کا موجب تو ضرور بنے گا۔

شہباز شریف کی یہ خوبی ہے کہ وہ خاندان پر آنے والے مشکلات کو ڈیل کے ذریعے کامیاب کرنے میں کافی ایکٹو ہیں اوراب سے پہلے آنے والی مشکلات سے خاندان کو نکالنے میں انہوں نے اہم کردار ادا کیاتھااور اس وقت بھی نواز شریف جب جیل میں ہے تو شہباز شریف حکومت کے ساتھ ساز باز کرنے کے لیے مختلف چینل کا استعمال کرنے کے لیے لندن جیسی محفوظ جگہ پر موجود ہیں۔