باپ نے سحری میں نہ اٹھنے پر فائرنگ کرکے بیٹی کو قتل کردیا

پولیس نے مقتول کے چچا کی شکایت پر ملزم کے خلاف مقدمہ درج کر لیا

Muqadas Farooq مقدس فاروق اعوان جمعرات مئی 12:49

باپ نے سحری میں نہ اٹھنے پر فائرنگ کرکے بیٹی کو قتل کردیا
پاکپتن (اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 16 مئی 2019ء) : پاکپتن میں باپ نے سحری میں نہ اٹھنے پر فائرنگ کرکے بیٹی کو قتل کردیا۔میڈیا رپورٹس کے مطابق پاکپتن میں یہ افسوسناک واقعہ پیش آیا ہے جہاں مبینہ طور پر باپ کی فائرنگ سے بیٹی دم توڑ گئی۔ پاکپتن کے رہائشی مختار احمد کا کہنا ہے کہ اس کے بھائی نے سحری کے وقت نہ اٹھنے کی وجہ سے بیٹی پر فائرنگ کر دی جس کے نتیجے میں وہ جاں بحق ہو گئی۔

پولیس نے مقتول کے چچا کی شکایت پر ملزم کے خلاف مقدمہ درج کر لیا ہے اور ملزم کی گرفتاری کے لیے کوششیں شروع کر دی ہیں۔خیال رہے اس سے قبل بھی کئی ایسے واقعات رپورٹ ہوتے رہے ہیں۔ جو اس بات کی نشاندہی کرتے ہیں کہ معاشرے میں عدم برداشت پروان چڑھ رہی ہے۔حال ہی میں کئی ایسے واقعات پیش آئے ہیں جو معاشرے میں بڑھتے عدم برداشت کے نتیجے میں ہونے والے خطرناک نتائج کی نشاندہی کر رہے ہیں۔

(جاری ہے)

حال ہی میں کہ پنجاب کے شہرساہیوال میں ایک افسوسناک واقعہ پیش آیا تھا جہاں 500 روپے کے تنازع پر تایا نے اپنے 6 سال کے بھتیجے کو قتل کر ڈالا۔پولیس کے مطابق ملزم نے اپنی بھابھی سے ادھار لی ہوئی رقم کی واپس کا مطالبہ کیا تو ان کے درمیان جھگڑا ہو گیا۔ ملزم نے اپنی بھابھی اور معصوم بھیتجے پر ڈنڈوں کے ذریعے سے تشدد کیا۔جس کی تاب نہ لاتے ہوئے بچہ دم توڑ گیا۔

بچے کی لاش اور زخمی ماں کو اسپتال منتقل کیا گیا جہاں زخمی خاتون کا علاج کیا گیا۔جب کہ اسی طرح ایک سنگ دِل عورت نے اپنے 14 سالہ بچے کو محض اس بات پر قتل کر دیا کہ اُس نے ہوم ورک کرنے سے انکار کر دیا تھا۔ پولیس کے مطابق ماں نے بچے کو پڑھائی کرنے کے لیے کہا تو اُس نے ماں کی بات ماننے میں کچھ پس و پیش کی، بس اسی بات پر اس خاتون کا پارہ ہو گیا۔ وہ کچن میں گئی اور وہاں سے تیز دھار چھُری اُٹھا لائی اور بچے کو ایک بار پھر پڑھائی کرنے کو کہا۔ مگر دُوسری بار بھی بچے کی جانب سے انکار پر ماں نے اپنے لخت جگر کے سینے میں چاقو گھونپ دیا تھا۔