Live Updates

تاجران مراعات ہی مانگتے ہیں برامدات نہیں بڑھا سکتے،5سال سے معیشت ایک ہی جگہ کھڑی ہے، مشیر تجارت

اجران برامدات بڑھانہیں سکتے اور صرف مراعات ہی مانگتے ہیں، عبدالحفیظ شیخ

Usman Khadim Kamboh عثمان خادم کمبوہ جمعرات مئی 20:57

تاجران مراعات ہی مانگتے ہیں برامدات نہیں بڑھا سکتے،5سال سے معیشت ایک ..
اسلام آباد(اردوپوائنٹ اخبار تازہ ترین۔16مئی2019ء) مشیرخزانہ حفیظ شیخ نے تاجروں سے ملاقات کی۔ملاقات کے دوران تاجران نے برامدات کے سلسلے میں مراعات کا مطالبہ کیا تو عبد الحفیظ شیخ نے ان سے کہا ہے کہ اگر برامدات پر حکومت مراعات فراہم کردے تو تاجر کتنی برآمدات بڑھا سکتے ہیں؟ مشیر خزانہ نے تاجروں کی جانب سے مزید مراعات مانگنے پر کہا کہ ”تاجران برامدات بڑھانہیں سکتے اور صرف مراعات ہی مانگتے ہیں“ انہوں نے مزید کہا کہ” گزشتہ 5سالوں سے برامدات ایک ہی جگہ پر کھڑی ہیں“۔

مشیرتجارت نے تاجروں سے سوال کیا کہ آپ مراعات لے کر کتنی برامدات بڑھائیں گے، اس سوال پر تاجروں نے چپ سادھ لی،اس کے بعد انہوں نے موٴقف دیا کہ ڈالرمہنگاہونے کی وجہ سے برامدات میں اضافے کاامکان نہیں ہے۔

(جاری ہے)

تاجروں کا اس موقعے پرکہنا تھا کہ برامدات کاانحصاردرامدات پرہوتاہے اور روپے کی قدر میں مسلسل کمی بھی ہوتی جارہی ہے۔ مشیر خزانہ نے تاجروں کو جواب دیا ہے کہ ڈالر کی قیمت کنٹرول کرنے کی ذمہ داری حکومت کی نہیں ہے بلکہ یہ ذمہ داری اسٹیٹ بینک آف پاکستان کی ہے۔

اس سے پہلے گورنر سندھ سے ملاقات کے بعد میڈیا سے بات کرتے ہوئے عبد الحفیظ شیخ نے کہا تھا کہ آئی ایم ایف پروگرام میں جانامشکل فیصلے کی ایک کڑی ہے لیکن غیرملکی ذخائر 10 ملین ڈالرسے بھی کم ہوچکے اور حکومت نے معاشی حالات کی بہتری کے لیے کئی اہم اور مشکل فیصلے کیے ہیں۔انہوں نے کہا کہ اس حوالے سے حکومت کی کوشش ہے کہ غریب یا متوسط طبقہ اس کی زد میں نہ آئے۔ اْن کا کہنا تھا کہ ورلڈبینک اورایشین بینک سے بھی 2 سے3ارب ڈالرقرض ملنے کا امکان ہے۔                                                                                                                                                                                                                                                                      
ڈالر تاریخ کی بلند ترین سطح پر سے متعلق تازہ ترین معلومات