Live Updates

بیٹے کی وفات کے بعد قمر الزمان کائرہ کی اپنے بیٹے کے بارے میں گفتگو

اسامہ ہمیشہ گھر والوں کو بتا کر کچھ بھی کرتا تھا لیکن آخری سفر پر جاتے ہوئے وہ ہمیں بتا کر نہیں گیا،قمرالزمان کائرہ

Usman Khadim Kamboh عثمان خادم کمبوہ اتوار مئی 11:06

بیٹے کی وفات کے بعد قمر الزمان کائرہ کی اپنے بیٹے کے بارے میں گفتگو
لالہ موسیٰ (اردوپوائنٹ اخبار تازہ ترین۔19مئی2019ء) جمعہ کے روز پاکستان پیپلز پارٹی سنٹرل پنجاب کے صدر ،سابق وفاقی وزیر چودھری قمر زمان کائرہ کا کا 18سالہ بیٹا اسامہ قمر جوکہ گورنمنٹ کالج لاہور میں فرسٹ ائیر کا طالب علم تھاجمعہ کو اپنے دوستوں کے ہمراہ کھاریاں سے سفید رنگ کی گاڑی DS-447 میں واپس لالہ موسیٰ آرہا تھا کہ ٹراما سینٹر لالاموسیٰ کے قریب نامعلوم موٹر سائیکل سوار کو بچاتے ہوئے کار قابو میں نہ رکھ سکا جس کے نتیجے میں کار درخت سے جا ٹکرائی۔

حادثے کے نتیجے میں اسامہ قمر کا جوگاڑی خود چلا رہا تھا موقع پر جاں بحق ہوگیا جبکہ اس کا دوست حمزہ بٹ ٹراما سنٹر میں زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے جاں بحق ہوگیا جبکہ اسامہ کی گاڑی بری طرح تباہ ہوگئی۔حادثہ کی خبر پھیلتے ہی ہسپتال میں سینکڑوں کی تعداد ان کے گھر پہنچے۔

(جاری ہے)

قمر زمان کائرہ کو حادثے کی اطلاع اسلام آباد میں زرداری ہاؤس میں پریس کانفرنس کے دوران دی گئی جس کے بعد وہ فوری لالہ موسیٰ چلے گئے دوسری جانب صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی، وزیر اعظم عمران خان ، پاک فوج کے سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ ، پاکستان پیپلزپارٹی کے شریک چیئر مین بلاول بھٹو زر داری ، سابق صدر آصف علی زر داری ، اپوزیشن لیڈر شہباز شریف سمیت متعدد سیاسی رہنماؤں نے قمر زمان کائرہ کے بیٹے کے کار حادثے میں جاں بحق ہونے والے پر دکھ اور افسوس کا اظہار کیا۔

قمر الزمان کائرہ کی اپنے بیٹے کے بارے میں گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ اسامہ ہمیشہ گھر والوں کو بتا کر کچھ بھی کرتا تھا لیکن آخری سفر پر جاتے ہوئے ہمیں بتا کر نہیں گیا۔قمرالزمان قائرہ نے بتایا کہ ان کے 3بچے ہین بڑی بیٹی کی شادی ہو چکی ہے جبکہ بڑا بیٹا پنجاب یونیورسٹی میں آخری سمیسٹر کا طالب علم ہے۔ انہوں نے بتایا کہ اسامہ گورنمٹ کالج کا طالب تھا اور وہ بہت حساس طبیعت کا مالک تھا۔

قمرالزمان کائرہ نے بتایا کہ اسامہ اپنی دادی اور والدہ کے پاؤں دباتا تھا اور اگر است چائے کے لیے کہا جاتا تو کسی ملازم کو کہنے کی بجائے خود بنا لاتا تھا۔ انہوں نے کہا کہ وہ بہت عاجز طبیعت کا مالک تھا اور اسے سیاست سے کوئی دلچسپی نہیں تھی جبکہ وہ بچپن میں ڈاکٹر بننا چاہتا تھا۔ انہوں نے رنجیدہ لہجے میں کہا کہ اسامہ ہمیشہ گھر والوں کو بتا کر کچھ بھی کرتا تھا لیکن آخری سفر پر جاتے ہوئے وہ ہمیں بتا کر نہیں گیا۔ 
آصف علی زرداری نیب کی حراست میں سے متعلق تازہ ترین معلومات