امریکا کے ساتھ بات چیت بہتر ہے مگر صورت حال موزوں نہیں : روحانی

آج صورت حال بات چیت کرنے کے لیے موزوں نہیں ہیں ہمارا آپشن مزاحمت ہے، ایرانی صدر

منگل مئی 20:18

امریکا کے ساتھ بات چیت بہتر ہے مگر صورت حال موزوں نہیں : روحانی
تہران(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - آن لائن۔ 21 مئی2019ء) ایران کے صدر حسن روحانی نے ایک بیان میں کہا ہے کہ وہ بات چیت اور سفارت کاری کی تائید کرتے ہیں مگر موجودہ حالات میں ان دونوں امور کو قبول نہیں کیا جا سکتا۔روحانی کا کہنا ہے کہ "آج صورت حال بات چیت کرنے کے لیے موزوں نہیں ہیں لہذا ہمارا آپشن مزاحمت ہی"۔ایرانی صدر نے دو ہفتے قبل باور کرایا تھا کہ ان کے ملک کو غیر معمولی جنگ درپیش ہے۔

انہوں نے ملک میں سیاسی گروپوں کے درمیان یک جہتی کا مطالبہ کیا تھا تا کہ موجودہ حالات سے نمٹا جا سکے جو روحانی کے نزدیک عراق کے ساتھ جنگ کے دوران ملکی صورت حال سے زیادہ دشوار ہو چکے ہیں۔دوسری جانب امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے پیر کے روز کہا کہ ان کا ملک ایران کے ساتھ بات چیت کے لیے کوشاں نہیں ہے۔

(جاری ہے)

انہوں نے مزید کہا کہ اگر تہران مذاکرات کا ارادہ رکھتا ہے تو اس پر لازم ہے کہ اس سلسلے میں پہلا قدم اٹھائے۔

ٹرمپ نے اپنی ٹویٹ میں کہا کہ "نیوز میڈیا نے حسب عادت بنا معلومات حاصل کیے جھوٹی خبر پھیلائی کہ امریکا ،، ایران کے ساتھ مذاکرات کی کوشش کر رہا ہے .. یہ جھوٹی رپورٹ ہے۔ ایران جب اس کے لیے تیار ہو گا تو وہ خود ہم سے رابطہ کرے گا۔ اس انتظار میں اس کی معیشت کے ڈھیر ہونے کا سلسلہ جاری رہے گا۔ میں ایرانی عوام کے حوالے سے بہت رنجیدہ ہوں۔!"بعد ازاں پیر کو ٹرمپ نے زور دے کر یہ بھی کہا کہ اگر ایران نے مشرق وسطی میں امریکی مفادات کے خلاف کچھ کرنے کی کوشش کی تو اسے "بھرپور طاقت" کا سامنا کرنا پڑے گا۔ انہوں نے کہا کہ ایران نے امریکا کے خلاف شدید عداوت کا اظہار کیا ہے۔