سعودی عرب کے بعد متحدہ عرب امارات نے بھی غیر ملکیوں کو مستقل شہریت دینے کا اعلان کردیا

گولڈن کارڈ اسکیم کے تحت امارات میں مقیم غیر ملکی سرمایہ کار، تاجر، ماہرین، محققین اور ذہین طلبہ فائدہ حاصل کر سکیں گے، ابتدائی طور پر 6 ہزار 8 سو غیر ملکیوں کو کارڈز جاری کرکے 100 ارب درہم کی سرمایہ کاری حاصل کی جائے گی

muhammad ali محمد علی منگل مئی 21:51

سعودی عرب کے بعد متحدہ عرب امارات نے بھی غیر ملکیوں کو مستقل شہریت دینے ..
دبئی (اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔21 مئی 2019ء) سعودی عرب کے بعد متحدہ عرب امارات نے بھی غیر ملکیوں کو مستقل شہریت دینے کا اعلان کردیا، گولڈن کارڈ اسکیم کے تحت امارات میں مقیم غیر ملکی سرمایہ کار، تاجر، ماہرین، محققین اور ذہین طلبہ فائدہ حاصل کر سکیں گے۔ تفصیلات کے مطابق دہائیوں بعد خلیجی ممالک نے غیر ملکیوں کو مستقل شہریت دینے کا سلسلہ شروع کر دیا ہے۔

اس سلسلے میں گزشتہ دنوں سعودی حکومت کی جانب سے اعلان کیا گیا تھا۔ سعودی عرب نے مملکت میں آباد غیر ملکیوں کیلئے گرین کارڈ اسکیم کے تحت مستقل شہریت دینے کا اعلان کیا۔ جبکہ اب سعودی عرب کے بعد متحدہ عرب امارات نے بھی غیر ملکیوں کو شہریت دینے کا اعلان کیا ہے۔ متحدہ عرب امارات میں غیر ملکیوں کو شہریت دینے کیلئے گولڈن کارڈ اسکیم کا اجراء کیا گیا ہے۔

(جاری ہے)

مستقل شہریت اسکیم کا اعلان نائب صدر متحدہ عرب امارات اور حاکم دبئی نے کیا۔
گولڈن کارڈ اسکیم کے تحت امارات میں مقیم غیر ملکی سرمایہ کار، تاجر، ماہرین، محققین اور ذہین طلبہ فائدہ حاصل کر سکیں گے۔ گولڈن کارڈ اسکیم کے تحت اب پاکستانیوں سمیت دیگر ممالک کے شہری بھی متحدہ عرب امارات کی شہریت اختیار کرکے وہاں مستقل سکونت اختیار کر سکتے ہیں۔

اس اسکیم کے تحت متحدہ عرب امارات کو اربوں ڈالرز کی سرمایہ کاری اور منافع حاصل ہونے کی امید ہے۔ نائب صدر متحدہ عرب امارات اور حاکم دبئی کے مطابق ابتدائی طور پر متحدہ عرب امارات میں سرمایہ کاری کرنے والے 6 ہزار 800 غیر ملکیوں کو گولڈ کارڈ جاری کیا جائے گا۔ جبکہ اس کے بدلے امارات کو 100 ارب درہم کی سرمایہ کاری حاصل ہوگی۔ غیر ملکی شہری متحدہ عرب امارات کا ایک سالہ مدت کا اقامہ 1 لاکھ درہم جبکہ گولڈن کارڈ پرمٹ 8 لاکھ درہم کی فیس ادا کرکے حاصل کر سکیں گے۔