پی ٹی آئی رہنماؤں کی گرفتاری کی بات پر عمران خان چئیرمین نیب کو آنکھیں نکالتے ہیں

معروف صحافی نے وزیراعظم عمران خان کے چئیرمین نیب کے ساتھ رویے سے متعلق اہم دعویٰ کر دیا

Muqadas Farooq مقدس فاروق اعوان جمعرات مئی 11:33

پی ٹی آئی رہنماؤں کی گرفتاری کی بات پر عمران خان چئیرمین نیب کو آنکھیں ..
لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔23 مئی2019ء) معروف صحافی نجم سیٹھی نے اس بات کا انکشاف کیا ہے کہ وزیراعظم عمران خان چئیرمین نیب جسٹس (ر) جاوید اقبال پر اپوزیشن کے ساتھ سخت رویہ اپنانے کا دباؤ ڈالتے ہیں۔تاہم چئیرمین نیب چاہتے ہیں کہ کام کو تھوڑا بیلنس رکھا جائے اگر اپوزیشن جماعتوں سے گرفتاری ہو رہی ہیں تو تحریک انصاف کے رہنماؤں کی بھی گرفتاریاں عمل میں لائی جائیں۔

نجم سیٹھی کا کہنا تھا کہ جب نیب پی ٹی آئی کے کسی رہنما کو گرفتار کرنے کو سوچے تو عمران خان انہیں آنکھیں نکالتے ہیں۔اس تمام صورتحال میں چئیرمین نیب بہت پریشان ہیں،انہوں نے وزیراعظم عمران خان سے یہ بھی کہہ دیا کہ پرویز خٹک کو بھی پکڑ لیں گے تاکہ کام تھوڑا بیلنس ہو جائے۔
واضح رہے جب نیب نے پاکستان تحریک انصاف کے رہنما علیم خان کو گرفتار کیا تھا تو پاکستان مسلم لیگ ن کی طرف سے یہ تنقید کی گئی تھی کہ علیم خان کی گرفتاری اسی لیے عمل میں لائی گئی ہے تاکہ کام کو تھوڑا بیلنس رکھا جائے۔

(جاری ہے)

پاکستان مسلم لیگ ن کے رہنما رانا ثناءاللہ نے دعویٰ کیا تھا کہ علیم خان کی گرفتاری وزیراعظم عمران خان کا فیصلہ تھا۔ان کا مزید کہنا تھا کہ تحریک انصاف کے متعدد وزراء کے فون ٹیپ کیے جاتے ہیں جب کہ گرفتاری سے پہلے علیم خان اور وزیر اعلیٰ کے فون ٹیپ ہو رہے تھے۔اور دونوں کو علم تھا کہ ان کے فون ٹیپ کیے جا رہے۔ رانا ثناءاللہ کا مزید کہنا تھا کہ اب اگلی باری پرویز الہیٰ کی ہے۔

انہوں نے کہا کہ اگر پرویز الہیٰ گرفتار ہو گئے تو اگلے ماہ تک پنجاب حکومت نہیں رہے گی۔رانا ثناءاللہ نے یہ بھی کہا کہ ویسے تو پہلا نمبر پرویز الہیٰ کا تھالیکن انہوں نئے ناراضی ظاہر کی جس کے بعد علیم خان کو گرفتار کیا گیا۔رانا ثناءاللہ کا مزید کہنا تھا کہ اگر اپوزیشن کے پچاس لوگ پکڑے جا رہے ہیں تو پھر حکومت میں سے بھی 5 تو پکڑنے پڑیں گے۔راناثناء اللہ کا مزید کہنا تھا کہ علیم خان کی گرفتاری کے بعدپاکستان تحریک انصاف میں شدید مایوسی پائی جا رہی ہے