’انہوں نے ہمیں دھکے دیے تو میں نے کہاخبردار اگر کسی نے میاں صاحب کو ہاتھ بھی لگایا، اس کے بعد سب پیچھے ہٹ گئے‘ مریم نواز

افسران ہمیں دھکے دیتے رہے،انہوں نے ہمارے ہاتھ چھڑانے کی بہت کوشش کی لیکن ہم نے ہاتھ نہ چھوڑے،مریم نواز نے نواز شریف اور اپنی گرفتاری کی مکمل کہانی سنانے کا اعلان کر دیا

Usman Khadim Kamboh عثمان خادم کمبوہ اتوار مئی 00:40

’انہوں نے ہمیں دھکے دیے تو میں نے کہاخبردار اگر کسی نے میاں صاحب کو ..
لاہور (اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔25مئی2019ء) مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز شریف نے اپنے ٹویٹر پیغام میں کہا ہے میں آپ کو وہ بات بتاتی ہوں جو کیمرے نے آپ کو نہیں دکھایا۔ انہوں نے بتایا ہے کہ میاں نواز شریف اور انہوں نے ایک دوسرے کا ہاتھ تھام رکھا ہوتا تھا جبکہ افسران نے ہمارے ہاتھ چھڑانے اور ہمیں ایک دوسرے سے الگ کرنے کی بہت کوشش کی لیکن ہم وہ کامیاب نہیں ہو سکے البتہ خواتین اہلکار مجھے کاندھوں اور بازوؤں سے پکڑ کر جھنجوڑتی رہیں۔

انہوں نے بتایا ہے کہ اس موقع پر ان کے بازو اور کاندھے تھکان اور کھینچا تانی سے تھک کر جم جاتے لیکن وہ اپنے والد سے الگ نہیں ہوئیں۔ مریم نوازنے اپنی دوسری ٹویٹ میں بتایا ہے کہ ایک بار ہمیں ایک دوسرے سے الگ کرنے کی کوشش میں ہمیں دھکے دینے شروع کر دیے اور چلانے لگے تو میں میاں صاحب کے سامنے آکر کھڑی ہو گئی اور میں نے انہیں چلا کر کہا کہ خبردار اگر کسی نے میاں صاحب کو ہاتھ بھی لگایا،
اس کے بعد انہوں نے دھکے لگانا بند کر دیا اور اس کے بعد سب پیچھے ہٹ گئے۔

(جاری ہے)

مریم نواز نے ٹویٹر پیگام میں کہا ہے کہ وہ اس حوالے سے کسی دن عوام کو مکمل کہانی سنائیں گی۔ مریم نواز نے دو الگ الگ ٹویٹس میں یہ تمام داستان سنائی ہے اور یہ بھی کہا ہے کہ وہ جلد یہ تمام کہانی عوام کے سامنے لائیں گی۔ انہوں نے بتایا کہ کیسے اہلکار انہیں میاں صاحب سے الگ کرنے کے لیے دھکے دیتے رہے اور ان پر چلاتے رہے لیکن انہوں نے اپنے والد کا ہاتھ نہیں چھوڑا اور ان کے ساتھ رہیں اور جب نوازشریف کو زیادہ تنگ کیا جانے لگا تو وہ اپنے والد کے سامنے ڈھال بن کر آئیں اور انہوں نے تمام لوگوں کو اپنے والد سے دور کر کے انہیں تکلیف سے بچایا۔