حوثی باغیوں کا ایک اور سعودی ائیرپورٹ کو ڈرون سے نشانہ بنانے کا دعویٰ

یمن کے حوثی باغیوں نے دعویٰ کیا ہے کہ انہوں نے جزان کے ہوائی اڈے پر موجود فوجی تنصیبات کو ڈرون سے نشانہ بنایا ہے

Usman Khadim Kamboh عثمان خادم کمبوہ اتوار مئی 14:07

حوثی باغیوں کا ایک اور سعودی ائیرپورٹ کو ڈرون سے نشانہ بنانے کا دعویٰ
ریاض(اردوپوائنٹ اخبار تازہ ترین۔26مئی2019) یمن کے حوثی باغیوں نے سعودی عرب کے جزان ہوائی اڈے پر فوجی تنصیبات کو ڈرون حملے میں نشانہ بنانے کا دعویٰ کیا ہے۔ غیرملکی میڈیا کے مطابق حوثی باغیوں کے مسیرہ ٹی وی کی رپورٹ میں سعودی عرب کے ایئرپورٹ پر حملے کا دعویٰ کیا گیا ہے۔ سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کی قیادت میں قائم عرب اتحادی افواج نے فوری طور پر جزان ہوائی اڈے پر حملے کی تصدیق یا تردید نہیں کی ہے۔

2014کے اختتام پریمن کے دارالحکومت ثنا سعودی عرب کی حمایت یافتہ حکومت کا تختہ الٹنے والے حوثی باغیوں کی جانب سے گذشتہ 2 ہفتے میں سعودی عرب کے مختلف شہروں میں میزائل اور ڈرون حملوں میں اضافہ دیکھنے میں آیا ہے۔ گذشتہ جمعرات کو حوثی قبائل نے دعویٰ کیا تھا کہ انہوں نے سعودی عرب کے شہر نجران میں ائیرپورٹ کو ڈرون حملے میں ٹارگٹ کیا ہے جبکہ سعودی عرب نے دعویٰ کیا تھا کہ انہوں نے اس حملے کو ناکام بنا دیا تھا۔

(جاری ہے)

یاد رہے کہ نجران کا علاقہ سعودی عرب کے دارالحکومت ریاض سے 8 سو 40 کلومیٹر کے فاصلے پر واقع ہے اور اس علاقے کی سرحد یمن سے ملتی ہے۔ رواں ماہ مئی کے آغاز میں حوثی باغیوں نے ریاض کے قریب تیل کی پائپ لائن کو نشانہ بنایا تھا۔ واضح رہے کہ یمن میں جاری جنگ کو اقوام متحدہ نے دنیا کا بد ترین انسانی بحران قرار دیا ہے جہاں 2کروڑ 40 لاکھ آبادی میں سے تقریبا ایک تہائی کو امداد کی ضرورت ہے۔

اس جنگ میں ہزاروں لوگ ہلاک ہوچکے ہیں جن میں سے بیشتر عام شہری ہیں۔ یاد رہے کہ حوثی باغیوں کی جانب سے سعودی عرب پر حملوں میں اضافہ اس وقت دیکھنے میں آیا جب امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ایران پر مزید معاشی پابندیاں عائد کرنے کے ساتھ ساتھ مشرق وسطیٰ میں ایک طیارہ بردار جہاز، بی 52 بمبار طیارے اور دیگر لڑاکا طیارے تعینات کیے۔ جس کے حوالے سے واشنگٹن حکام کا کہنا ہے کہ ایران مبینہ طور پر خطے میں موجود امریکی اثاثوں کو نقصان پہنچانا چاہتا ہے۔

جس کے بعد خطے میں امریکی اور سعودی تنصیبات پر متعدد حملے بھی کیے گئے، جن میں عراق کے دارالحکومت بغداد کے گرین زون میں راکٹ حملہ، مشرق وسطیٰ کے داخلے کے مقام فجیرہ میں 4 تیل بردار جہازوں پر حملہ اور یمن کے حوثی قبائل کی جانب سے سعودی عرب میں تیل کی تنصیبات پر ڈرون حملے شامل ہیں۔