حکومت کا ٹائم پیرڈ ختم ، مزید ٹائم نہیں دے سکتے،عید کے بعد یو ٹرن حکومت کے خلاف لانحہ عمل تیار کرینگے ، سید خورشید شاہ

کبھی ضیاء الحق نے قانون کو پامال کیا تو کبھی کارگل کا سانحہ ہوا ان سے حساب کون لے گا سکندر مرزا سے لے کر جنرل ایوب، جنرل یحییٰ، جنرل ضیاء الحق سے لے کے جنرل مشرف تک سب نے ملک کو اندھیرے میں ڈالا، میڈیا سے گفتگو

اتوار مئی 14:35

حکومت کا ٹائم پیرڈ ختم ، مزید ٹائم نہیں دے سکتے،عید کے بعد یو ٹرن حکومت ..
رانی پور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 26 مئی2019ء) پاکستان پیپلز پارٹی کے مرکزی رہنما سید خورشید شاہ نے کہا ہے کہ موجودہ حکومت کا ٹائم پیرڈ ختم ہو چکا ہے، مزید ٹائم نہیں دے سکتے،عید کے بعد یو ٹرن حکومت کے خلاف لانحہ عمل تیار کریں گے،کبھی ضیاء الحق نے قانون کو پامال کیا تو کبھی کارگل کا سانحہ ہوا ان سے حساب کون لے گا سکندر مرزا سے لے کر جنرل ایوب، جنرل یحییٰ، جنرل ضیاء الحق سے لے کے جنرل مشرف تک سب نے ملک کو اندھیرے میں ڈالا۔

(جاری ہے)

میڈیا سے گفتگو میں رہنما پیپلزپارٹی خورشید شاہ نے کہا کہ 40 سال سے ملک لوٹنے والوں کا بھی احتساب ہونا چاہیے، کبھی ضیاء الحق نے قانون کو پامال کیا تو کبھی کارگل کا سانحہ ہوا کون لے گا ان سے حساب سکندر مرزا سے لے کر جنرل ایوب، جنرل یحییٰ، جنرل ضیاء الحق سے لے کے جنرل مشرف تک سب نے ملک کو اندھیرے میں ڈالا۔خورشید شاہ نے کہاکہ افطار پارٹیوں میں سیاستدانوں کا ملنا ہوتا رہتا ہے مگر یہاں افطار پارٹی نے لوگوں کی نیندیں اڑا دی ہیں، پی ٹی آئی سے حکومت نہیں چل سکتی ۔انہوں نے اپنے وزراء ہٹا کر مشرف دور کے وزیر رکھ لیے ہیں۔ انہوںنے کہاکہ عید کے بعد اس یو ٹرن حکومت کے خلاف لانحہ عمل تیار کریں گے، موجودہ حکومت کا ٹائم پیرڈ ختم ہو چکا ہے، مزید ٹائم نہیں دے سکتے۔