Live Updates

ایم کیوایم نے وزیراعظم کا سندھ میں صوبہ نہ بنانے کا بیان مسترد کردیا

بہاولپوراورہزارہ صوبے کی بات ہوسکتی ہے توسندھ میں کیوں نہیں ہوسکتی، وزیراعظم کی پارٹی کی اپنی ترجیحات ہوں گی لیکن ہم اپنے مئوقف پرقائم ہیں، صوبےکی محب وطنی کی بنیاد پرکررہے ہیں۔وفاقی وزیرخالد مقبول صدیقی کا تقریب سے خطاب

sanaullah nagra ثنااللہ ناگرہ اتوار مئی 18:53

ایم کیوایم نے وزیراعظم کا سندھ میں صوبہ نہ بنانے کا بیان مسترد کردیا
کراچی (اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔26 مئی 2019ء) ایم کیوایم پاکستان نے وزیراعظم کے سندھ میں مزید صوبے کی حمایت کا بیان مسترد کردیا۔ وفاقی وزیرانفارمیشن ٹیکنالوجی خالد مقبول صدیقی نے کہا ہے کہ بہاولپوراورہزارہ صوبے کی بات ہوسکتی ہے توسندھ میں کیوں نہیں ہوسکتی، وزیراعظم کی پارٹی کی اپنی ترجیحات ہوں گی لیکن ہم اپنے مئوقف پرقائم ہیں، صوبےکی بات ووٹ لینے کیلئے نہیں محب وطنی کی بنیاد پرکررہے ہیں۔

انہوں نے آج یہاں ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان کی آبادی بڑھ رہی ہے۔ اس لیے صوبے بھی ضروری ہیں۔ ڈویژن اوراضلاع کی طرح صوبے بھی لسانی بنیاد پرنہ ہوں۔ ہم نے مہاجرصوبے کی نہیں بلکہ پورے ملک میں صوبے بنانے کی بات کی۔ انہوں نے کہا کہ بہاولپوراورہزارہ صوبے کی بات ہوسکتی ہے توسندھ میں کیوں نہیں ہوسکتی۔

(جاری ہے)

وزیراعظم کی پارٹی کی اپنی ترجیحات ہوں گی لیکن ہم اپنے مئوقف پرقائم ہیں۔

صوبےکی بات ووٹ لینے کیلئے نہیں محب وطنی کی بنیاد پرکررہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ سندھ ہمیں بڑا عزیز ہے۔ صوبہ سندھ کے مفاد کے خلاف نہیں۔ ے گناہ شخص ایک دن کے لیے قید ہے تو اسے رہا کیا جائے۔ علاقے کی تعمیر و ترقی کیلیےاقدامات ہو رہے تھے۔ واضح رہے وزیراعظم عمران خان نےگزشتہ دنوں یہاں کراچی میں پارٹی رہنماؤں اور اتحادی جماعت جی ڈی اے کے رہنماؤں سے ملاقات میں گفتگو کر رہے تھے۔

ملاقات  صوبے کی سیاسی صورتحال اور وفاق کے مختلف ترقیاتی منصوبوں کی تعمیر پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ ملاقات میں پی ٹی آئی رہنماء حلیم عادل شیخ، فیصل ووڈا، اشرف قریشی، فردوس شمیم نقوی، خرم شیر زمان اور جی ڈی اے کے ارکان میں رہنماء ارباب غلام رحیم، صدر الدین شاہ راشدی، نصرت سحر عباسی، نند کمار دیگر شامل تھے۔ اس سے قبل وزیراعظم عمران خان سے آج کراچی میں ایف پی سی سی آئی اور تاجر برادری کے وفد نے ملاقات کی ، ملاقات میں کاروباری سرگرمیوں بارے تبادلہ خیال کیا گیا۔

ملاقات میں گورنر سندھ عمران اسماعیل، مشیرتجارت عبدالرزاق داؤداور وزیربحری امور بھی شریک تھے۔ وزیراعظم عمرا ن خان نے کہا کہ میرا مشن پاکستان سے غربت مٹانا ہے۔غربت مٹانے میں تاجر برادری میرا ساتھ دے۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ حکمرانوں نے معیشت کو تباہ کردیا، ہمیں خستہ حال معیشت ملی، چوروں کو نہیں چھوڑ سکتا۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کی اس وقت توجہ صرف معاشی استحکام پر مرکوز ہے۔

ایف بی آر اور اسٹیٹ بینک میں ماہرین تعینات کیے ہیں، تاجربرادری سے التماس ہے کہ وہ ایمنسٹی اسکیم سے فائدہ اٹھائے۔عمران خان نے کہا کہ میں چاہتا ہوں کہ میری حکومت سب سے زیادہ کاروبار اور سرمایہ کاری دوست حکومت کے طور پر جانی جائے۔ واضح رہے وزیراعظم عمران خان آج جمعہ کو ایک روزہ دورے پرکراچی پہنچے ہیں۔ وفاقی وزیر برائے بحری امور علی زیدی، مشیر برائے تجارت عبدالرزاق داؤد اور معاون خصوصی نعیم الحق بھی ان کے ہمراہ ہیں۔

وزیراعظم سندھ میں نیا پاکستان ہاؤسنگ پروگرام کے اجراء کے حوالہ سے اجلاس کی صدارت کریں گے۔ سندھ سے اتحادی جماعتوں کے وفد کی ملاقات بھی مصروفیات کا حصہ ہے۔ وزیراعظم عمران خان شوکت خانم میموریل کینسر ہسپتال کی عطیات مہم کیلئے منعقدہ افطار عشائیہ میں بطور مہمان خصوصی شرکت کریں گے۔
وزیراعظم حاضر ہے سے متعلق تازہ ترین معلومات