امن اورمفاہمت ہتھیاروں سے زیادہ طاقتور ہے، مریم نواز

دونوں جانب پاکستانی بیٹے ہیں، تمام ریاستی ادارے کردار ادا کریں، کیا ہم پہلے بھی احتجاج کچلنےکی بھاری قیمت ادا نہیں کر چکے؟ پاکستان اندرونی کشیدگی کا متحمل نہیں ہوسکتا، نائب صدر ن لیگ مریم نواز کا خاڑ کمر واقعے پر اظہار افسوس

sanaullah nagra ثنااللہ ناگرہ اتوار مئی 20:22

امن اورمفاہمت ہتھیاروں سے زیادہ طاقتور ہے، مریم نواز
لاہور(اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔26 مئی 2019ء) پاکستان مسلم لیگ ن کی مرکزی نائب صدر مریم نواز نے کہا ہے کہ امن اور مفاہمت ہتھیاروں سے کہیں زیادہ طاقتور ہے، دونوں جانب پاکستانی بیٹے ہیں، تمام ریاستی اداروں کو کردار ادا کرنا چاہیے، کیا ہم پہلے بھی احتجاج کچلنےکی بھاری قیمت ادا نہیں کر چکے؟ انہوں نے ٹویٹر خاڑکمر واقعے پراپنے ردعمل میں کہا کہ  اللہ تعالی واقعے میں جاں بحق ہونے والوں کے لواحقین کو صبر جمیل عطا فرمائے اور تمام زخمیوں کو صحت کاملہ سے نوازے ۔

آمین۔
انہوں نے کہا کہ پاکستان اندرونی طور پر کشیدگی کا متحمل نہیں ہوسکتا ۔ دونوں طرف اگر پاکستان کے بیٹے ہیں تو سیاسی ،صحافتی حلقوں سمیت ریاست کے تمام اداروں کو ذمہ دارانہ کردار ادا کرنا ہوگا ورنہ ایک بار پھر پاکستان کو ناقابلِ تلافی نقصان پہنچ سکتا ہے۔

(جاری ہے)

مریم نواز نے کہا کہ ہر پاکستانی کی جان قیمتی اور اس کا خون مقدس ہے۔

خون بہے تو حقائق قوم کے سامنے آنے چاہیں۔ انہوں نے کہا کہ محبت، امن اور مفاہمت ہتھیاروں سے کہیں زیادہ طاقت ور ہیں۔ کیا ہم احتجاج کچلنے اور آوازیں دبانے کی بہت بھاری قیمت ادا نہیں کر چکے؟ اللہ پاکستان پر رحم کرے۔ اسی طرح قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف میاں محمد شہباز شریف نے ٹویٹر پر اپنے ردعمل میں کہا کہ خاڑ کمر واقعہ پر انتہائی افسوس ہوا۔

اللہ تعالی شہداء کے درجات بلند فرمائے اور لواحقین کو صبرجمیل دے۔ انہوں نے زخمیوں کی جلد صحت یابی کی کیلئے بھی دعا کی ہے۔ شہباز شریف نے کہا کہ خاڑ کمر واقعہ پر سیاست قومی جرم ہوگی۔ خاڑ کمر واقعہ پر تمام حقائق پارلیمنٹ کے سامنے آنے چاہئیں۔ انہوں نے کہا کہ بندوقوں سے مسئلے حل نہیں ہوسکتے۔ اپنے گھر میں لڑائی، فساد اور افراتفری کا دشمنوں کو فائدہ ہوگا۔

سیاسی رہنمائی میں مذاکرات کے ذریعے مسائل کو حل کیا جائے۔ شہباز شریف نے کہا کہ خدارا پاکستان کیلئے اختلاف رائے کو دشمنی نہ بنایا جائے۔ تمام محب وطن صورتحال کی نزاکت دیکھتے ہوئے اپنا کردار ادا کریں۔ واضح رہے آئی ایس پی آر کے مطابق محسن داوڑ اور علی وزیر کی قیادت میں مسلح گروہ نے شمالی وزیرستان کے علاقہ خرقمر چیک پوسٹ پر حملہ کیا جہاں فائرنگ کے تبادلہ میں 3 حملہ آور ہلاک اور 10 زخمی ہوئے جبکہ پاک فوج کے 5 جوان زخمی ہوئے ۔

اتوار کو ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل آصف غفور کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ گروہ کے حملے کا مقصد ممکنہ دہشت گردوں کو چھڑانا تھا۔گروہ کی فائرنگ سے پاک فوج کے 5 جوان بھی زخمی ہوگئے،حملے کے دوران جوانوں نے انتہائی صبر وتحمل کا مظاہرہ کیا، حملہ آوروں نے براہ راست فائرنگ کی ۔رکن قومی اسمبلی علی وزیر کو گرفتار کرلیا گیا جبکہ محسن داوڑ مجمع کو اکسانے کے بعد فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے۔زخمیوں کو طبی امداد کیلئے آرمی ہسپتال منتقل کردیا گیا۔