امریکی پابندی کے بعد متعدد کمپنیوں نے ہواوے سے تعلقات ختم کردئیے

اتوار مئی 21:15

امریکی پابندی کے بعد متعدد کمپنیوں نے ہواوے سے تعلقات ختم کردئیے
واشنگٹن(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - آن لائن۔ 26 مئی2019ء) امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے قومی سیکیورٹی کو جواز بناکر ہواوے کو بلیک لسٹ کیے جانے کے بعد سے چینی کمپنی کو سنگین ترین بحران کا سامنا ہے۔فی الحال تو اس کمپنی کو امریکی محکمہ تجارت نے عارضی طور پر 3 ماہ کے لیے امریکی پرزہ جات اور سافٹ وئیر کی خریدار سمیت دیگر امریکی کمپنیوں سے کاروبار کی اجازت دی ہے، مگر اس پابندی کا اطلاق مختلف شعبوں میں ہورہا ہے۔

اس پابندی میں کے نتائج کافی زیادہ ہوں گے کیونکہ متعدد بین الاقوامی کمپنیوں نے اب تک ہواوے سے اپنے تعلقات منقطع کرلیے ہیں۔درج ذیل میں ان کمپنیوں کی فہرست ہے جنہوں نے ہواوے سے اب تک اپنے تعلقات منقطع کرلیے ہیں۔ گوگل نے ہواوے کے ساتھ اپنا کاروبار معطل کرنے کا اعلان 19 مئی کو کیا تھا جس کے تحت ہواوے اور آنر فونز کے لیے اینڈرائیڈ لائسنس کو منسوخ کردیا گیا، تاہم امریکی محکمہ تجارت کی جانب سے 3 ماہ کے عارضی ریلیف کے بعد گوگل نے بھی مزید 90 دن کے لیے اینڈرائیڈ لائسنس کو برقرار رکھنے کا اعلان کیا، جس کے دوران صارفین کو اپ ڈیٹس اور سیکیورٹی ریلیزز ملتی رہیں گی، گوگل کے مطابق اس وقت کام کررہے ہواوے فونز کے لیے گوگلے پلے اسٹور اور پلے سروسز برقرار رہیں گی مگر مستقبل کے حوالے سے فی الحال کچھ واضح نہیں کہا جاسکتا۔

(جاری ہے)

گوگل کے اعلان پر ہواوے نے اپنا آپریٹنگ سسٹم رواں سال کے آخر تک لانے کا اعلان کیا۔برطانیہ سے تعلق رکھنے والی اس چپ ڈیزائنر کمپنی نے ہواوے کے ساتھ تمام معاہدے اور سپورٹ امریکی پابندی کے بعد ختم کردیئے۔ اس کمپنی کی جانب سے جاری میمو کے مطابق یہ کمپنی امریکی ساختہ ٹیکنالوجی موبائل چپ سیٹس اور پراسیسرز کے لیے کرتی ہے اور یہی وجہ ہے کہ وہ امریکی حکومت کی پابندی کے فیصلے پر عملدرآمد کررہی ہے، یہ فیصلہ ہواوے کے کیرین پراسیسرز کے لیے بری خبر ہے کیونکہ وہ اے آر ایم ڈیزائن پر ہی تیار ہورہے ہیں۔

مائیکرو سافٹ نے امریکا میں اپنے آن لائن اسٹور سے ہواوے لیپ ٹاپس کو ہٹا دیا تاکہ امریکی پابندی کے حکم پر عملدرآمد کرسکے، مائیکرو سافٹ کی جانب سے مستقبل قریب میں ہواوے کے لیے ونڈوز لائسنس کو بھی منسوخ کیے جانے کا امکان ہے تاہم ابھی تک امریکی کمپنی نے اس حوالے سے کوئی واضح موقف بیان نہیں کیا۔ فیس آئی ڈی پارٹس سپلائر کمپنی نے گزشتہ ہفتے گوگل کے بعد ہواوے سے اپنے کاروباری تعلقات ختم کرنے کا اعلان کیا تھا۔

جاپانی کمپنی پیناسونک نے بھی ہواوے سے اپنے تعلقات ختم کرنے کا اعلان کیا، برطانوی روزنامے گارڈین کی رپورٹ کے مطابق کمپنی کے مطابق کا کہنا تھا 'ہم ہواوے اور اس کی 68 گروپ کمپیوں سے تمام کاروباری ٹرانزیکشنز روک رہے ہیں، جس کی وجہ امریکی حکومتی پابندی ہی'۔بلومبرگ کی ایک رپورٹ کے مطابق ان چاروں کمپنیوں نے اپنے ملازمین کو ہدایت کی ہے کہ اگلے نوٹس تک ہواوے کو کچھ بھی فراہم نہ کیا جائے۔

ٹیکنالوجی کمپنیوں کے ساتھ ساتھ ہواوے کو وائی فائی الائنس سے بھی معطل کردیا گیا، یہ وہ گروپ ہے جو تمام وائرلیس ٹیکنالوجی کے معیار طے کرتا ہے جبکہایس ڈی ایسوسی ایشن ایس ڈی کارڈز کے اسٹینڈرڈ طے کرنے والا گروپ ہے اور اس نے بھی چینی کمپنی کو معطل کیا ہے، اور اس معطلی کا مطلب ہے کہ یہ اسمارٹ فون بنانے والی کمپنی ایس ڈی کارڈ یا مائیکرو ایس ڈی کارڈ آنے والے کسی ڈیوائس میں استعمال نہیں کرسکے گی۔