بینظیرانکم سپورٹ پروگرام ختم نہ کرنے کا آئی ایم ایف نے کہا، بلاول بھٹو

جوکہتے پیپلزپارٹی کچھ نہیں کرتی، ان کو میرا جواب سندھ کی خواتین ہیں جو اپنے پاؤں پر کھڑی ہیں، ایک لاکھ 80 ہزارخواتین کو بلا سود قرضے دیے ہیں، کیا حکومت کو خواتین، بچوں اور مردوں کا احساس ہے؟ سکھر میں عوامی اجتماع سے خطاب

sanaullah nagra ثنااللہ ناگرہ جمعرات جولائی 16:41

بینظیرانکم سپورٹ پروگرام ختم نہ کرنے کا آئی ایم ایف نے کہا، بلاول بھٹو
سکھر(اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔11 جولائی 2019ء) پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ آئی ایم ایف نے بھی کہا بینظیرانکم سپورٹ پروگرام ختم نہیں کرنے دیں، جوکہتے پیپلزپارٹی کچھ نہیں کرتی، ان کو میرا جواب سندھ کی خواتین ہیں جو اپنے پاؤں پر کھڑی ہیں، ایک لاکھ 80 ہزارخواتین کو بلا سود قرضے دیے ہیں، کیا حکومت کو خواتین، بچوں اور مردوں کا احساس ہے؟ انہوں آج یہاں سکھر میں عوامی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سندھ حکومت اور پیپلزپارٹی کا غربت مٹاوپروگرام پورے سندھ میں پھیل رہا ہے۔

جوکہتے پیپلزپارٹی کچھ نہیں کرتی، ان کو میرا جواب سندھ کی خواتین ہیں جو اپنے پاؤں پر کھڑی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بینظیرانکم سپورٹ پروگرام پاکستان کی حکومت نے شروع کیا۔

(جاری ہے)

پوری دنیا تسلیم کررہی ہے کہ سندھ کی خواتین سب سے آگے ہیں۔ بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ آئی ایم ایف نے بھی کہا کہ بینظیرانکم سپورٹ پروگرام ختم نہیں کرنے دیں۔ ینظیرانکم سپورٹ پروگرام ختم کرنے کی ان کی کوشش ہوگی لیکن عوام ان کو ایسا نہیں کرنے دینگے۔

بلاول بھٹو نے شرکاء سے کہا کہ آپ کو لگتا ہے حکومت کو خواتین، بچوں اور مردوں کا احساس ہے؟ انہوں نے کہا کہ ہماری حکومت نے ایک لاکھ 80 ہزار خواتین کو بلا سود قرضے دیے ہیں۔ سندھ میں 50 ہزار خواتین کو ووکیشنل ٹریننگ دی گئی ہے۔ بلاول بھٹوزرداری نے کہا کہ گھوٹکی کے غریب عوام کو اپنے پاؤں پر کھڑا کرنے کیلئے فنڈز دیں گے۔ سندھ حکومت نے10 لاکھ گھرانوں کو سہولتیں فراہم کی۔

بلاول بھٹو نے کہا کہ شہید بھٹو نے بھی ان پاکستانیوں کو زمین دلوائی تھی جو اپنی زندگی میں کبھی زمین کے مالک نہیں بنے۔ انہوں نے کہا کہ شہید بھٹو نے ملک بھر میں نوجوانواں کو روزگار دیا۔ بینظیر کے دور میں مشہور تھا، بینظیر آئے گی روزگار لائے گی۔ خیبرسے کراچی تک لیڈی ہیلتھ ورکرز کام کررہی ہیں۔ خواتین کی معاشی زندگی میں بہتری لانے کی کوشش کریں گے۔ بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ سندھ میں اگلی حکومت بھی پیپلزپارٹی کی ہوگی۔ سندھ کے مستقبل کیلئے مل کرکام کرنے کی ضرورت  ہے۔ بلاول نے کہا کہ مل کر کام کریں گے تو تمام شعبوں میں بہتری لا سکیں گے۔ جب ملکر کام کریں گے تو ایک اور انقلاب آئے تو ہم سندھ کی معیشت کو بہتر کریں گے۔