ٹی وی اینکر مُرید عباس قتل کے حوالے سے نیا انکشاف سامنے آ گیا

قتل کے واقعے سے چند روز پہلے ملزم عاطف زمان کو اغوا کیا گیا تھا

Muhammad Irfan محمد عرفان جمعرات جولائی 16:56

ٹی وی اینکر مُرید عباس قتل کے حوالے سے نیا انکشاف سامنے آ گیا
کراچی(اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 11جولائی 2019ء) اینکر مُرید عباس کے قتل کے حوالے سے مزید چونکا دینے والی تفصیلات سامنے آئی ہیں۔ قتل کی اس واردات کو انجام دینے والے ملزم عاطف زمان کے والد نے دعویٰ کیا ہے کہ ان کے بیٹے عاطف کو چند روز قبل دوستوں نے اغوا کر لیا تھا۔ بالآخر تاوان کی ادائیگی کے بعد اُسے چند روز قبل رہائی مِلی۔ ملزم عاطف زمان کے والدین مانسہرہ میں مقیم ہیں۔

ملزم کے والد کا کہنا ہے کہ چھ روز قبل عاطف کو اُس کے پانچ چھ قریبی دوستوں نے اغوا کر لیا تھا۔ جنہیں تاوان کی رقم ادا کرنے کے بعد عاطف کی رہائی ممکن ہو پائی تھی۔ انہوں نے مزید کہا کہ اپنے بیٹے کے حوالے سے قانونی دفاع کے لیے انہوں نے وکیل سے رجوع کر لیا ہے۔ ملزم عاطف کے والد نے اپنے بیٹے کے حوالے سے میڈیا پر چلنے والی خبروں کو حقائق کے منافی قرار دیا۔

(جاری ہے)

جبکہ عاطف کے وکیل منصف جان نے بتایا ہے کہ وہ اپنے موٴکل سے ملنا چاہتے ہیں تاکہ اس قتل کیس کی پیروی کر سکیں۔ تاہم ابھی تک اُن کی عاطف سے ملاقات نہیں ہو پائی۔ اس معاملے میں ایس ایس پی انوسٹی گیشن ساوٴتھ طارق دھاریجو نے بتایا ہے کہ ملزم نے سوچے سمجھے منصوبے کے مطابق دونوں افراد قتل کیے۔ اسی لیے اُس نے اس واردات سے ایک روز پہلے اپنے بیوی بچوں کو منتقل کردیا تھا۔

وہ کاروبار میں شامل مزید افراد کو بھی مارنا چاہتا تھا، ملزم کی حالت بہتر ہے تفصیلی بیان میں مزید حقائق سامنے آ جائیں گے۔ جب کہ دوسری جانب کراچی کے عللاقے ڈیفینس میں اینکر پرسن مرید عباس اور خضر حیات کے قاتل کا ریکارڈ جمع کر لیا گیا۔ ملزم انفینیٹی نامی کمپنی کی آڑ میں سمگلنگ کا کاروبار کر رہا تھا۔سی سی ٹی وی فوٹیج میں دوسرے بندے کی شناخت عادل کے نام سے ہوئی ہے۔

عاطف زمان کی انفنٹی نامی کمپنی کا انکشاف بھی ہوا ہے۔ملزم کمپنی کی آڑ میں 70 سے زائد افراد سے لگ بھگ 50 کروڑ روپے بٹور چکا تھا،میڈیا انڈسٹری کے 30سے 40افراد نے عاطف زمان کو پیسے دئیے تھے۔ملزم عاطف ٹائر کی سمگلنگ میں ملوث پایا گیا۔ملزم کے بلوچستان کے ٹائرز سمگلرز سے رابطوں کا انکشاف ہوا ہے۔ملزم نے چند ماہ قبل 25کروڑ روپے چوری ہونے کا اظہار کیا تھا۔

جس کے بعد شراکت داروں سے تنازعہ شدت اختیار کر گیا۔عاطف زمان اور اس کے ساتھیوں نے درجنوں افراد کو جال میں پھنسا رکھا تھا۔آسانی سے پیسہ کمانے کے لالچ نے سینکڑوں افراد کے کروڑوں روپے ڈبو دئیے۔بظاہر ٹائر کے نام پر کیے گئے کاروبار میں سینکڑوں افراد نے سرمایہ کاری کی تھی۔ ٹی وی انڈسٹری کے سینکڑوں ملازمین نے کروڑوں روپے لگا رکھے تھے۔

مرید عباس نے بھی عاطف زمان کے ساتھ مل کر سرمایہ کاری کی تھی۔میڈیا انڈسٹری کے کچھ اور لوگ بھی ان کے پارٹنر تھے۔لوگوں سے کم از کم 10 لاکھ روپے کی رقم بطور سرمایہ کاری لی جاتی تھی۔10 لاکھ سرمایہ کاری کے عوض ہر 2ماہ بعد 50ہزار روپے دئیے جاتے۔ دو ماہ سے سرمایہ کاری کرنے والوں کورقم کی ادائیگی نہیں ہو رہی تھی۔ سرمایہ کاری کے نام پر لی گئی رقم اور دئیے جانے والے پیسے کیش تھے۔میڈیا انڈسٹری کے لوگوں نے پرویڈنٹ فنڈ اور جائیدادیں بیچ کر سرمایہ کاری کی۔لوگوں سے لیے اور دئیے گئے پیسوں کے لیے بینکنگ چینل کا استمال نہیں کیا گیا۔