Live Updates

نواز شریف نے جج ارشد ملک سے کوئی ملاقات نہیں کی

ہم احتساب چاہتے ہیں لیکن یہ نہیں جو نیب اور عدالت میں ہو رہا ہے،شاہد خاقان عباسی

Sajjad Qadir سجاد قادر ہفتہ جولائی 06:19

نواز شریف نے جج ارشد ملک سے کوئی ملاقات نہیں کی
لاہور ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 13 جولائی2019ء)   بات تو سچ ہے مگر بات ہے رسوائی کی۔جس عہدے پر جج ارشد ملک بیٹھے ہیں اور جتنے بڑے اور پاکستان کے اہم مقدمات کے فیصلے کرنے کاختیار انہیں حاصل ہے تو ان کی اس قسم کی ویڈیوز سامنے آئیں تو سوال تو اٹھیں گے۔اگرچہ جج ارشد ملک کو کام کرنے سے روک دیا گیااور ان کی ویڈیو کی تحقیق کے لیے سپریم کورٹ میں دی جانے والی درخواست بھی سماعت کے لیے قبول کر لی گئی مگر اس وقت عوام اور اپوزیشن راہنما کئی سوالات اٹھاتے نظر آ رہے ہیں۔

اسی حوالے سے لاہور میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ احتساب عدالت کے جج ارشد ملک کی برطرفی سے ثابت ہوگیا کہ عدلیہ پر عمران خان نے دبائو ڈالا اور جج کو بلیک میل کیا، 2 دن قبل عمران خان نے کہا تھا کہ ارشد ملک کے معاملے سے حکومت کا کچھ لینا دینا نہیں یہ عدلیہ کا کام ہے وہ خود دیکھے گی لیکن آج حکومتی ترجمانوں نے برطرف جج ارشد ملک کے بیان حلفی کا دفاع کیا جس سے ثابت ہوگیا کہ حکومت عدلیہ پر اثرانداز ہورہی ہے۔

(جاری ہے)

شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ نوازشریف نے جج ارشد ملک سے کوئی ملاقات نہیں کی۔ نوازشریف تو جیل میں تھے وہ کیسے ملاقات کرسکتے تھے؟ جج ارشد ملک جھوٹ بول رہے ہیں کہ انہوں نے نوازشریف سے ملاقات کی۔لیگی رہنما نے کہا کہ اب اعلیٰ عدلیہ کا امتحان ہے ہم احتساب چاہتے ہیں لیکن یہ احتساب نہیں جو نیب اور عدالت میں ہو رہا ہے۔راناثناءاللہ کی گرفتاری پر شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ مسلم لیگ ن پنجاب کے صدر اور رکن قومی اسمبلی رانا ثنااللہ پر ہیروین رکھنے کا جعلی مقدمہ بنایا گیا ، بچہ بچہ جانتا ہے کہ یہ کیس بنانے کی کوئی منطق نہیں اور نہ ہی عقل اس بات کو تسلیم کرتی ہے، رانا ثناءاللہ کو 12 دن پہلے گرفتار کیا گیا۔

اے این ایف نے رانا ثناءاللہ کا ایک دن کا بھی ریمانڈ حاصل نہیں کیا، ان کو ریمانڈ لے کر تفتیش کرنی چاہیے تھی۔یہ صرف رانا ثنااللہ کی آواز کو دبانے کا کیس ہے یہ کیس عوام کے سامنے رکھا جائے تو حقیقت کھل کر سامنے آجائے گی۔

جج ارشد ملک کا مبینہ ویڈیو اسکینڈل سے متعلق تازہ ترین معلومات