3 کروڑ 65 لاکھ 27 ہزار 664 روپے مالیت کی جعلی و غیر معیاری زرعی ادویات اور کھادیں ضبط

ہفتہ اگست 18:14

راولپنڈی۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - اے پی پی۔ 10 اگست2019ء) محکمہ زراعت پنجاب نے جعلی زرعی ادویات کے مکروہ دھندے میں ملوث عناصر کے خلاف کارروائی کے دوران صوبہ بھر میں 20 ہزار 2 سو 40 زرعی ادویات و کھاد ڈیلرز کو چیک کیا اور 8 ہزار 51 زرعی ادویات و کھادوں کے سیمپلز لیبارٹریوں کو بھیجے گئے۔ زرعی ترجمان نے اے پی پی کو بتایاکہ غیر معیاری زرعی ادویات و کھادوں کے خلاف 1,033چھاپے مارے گئے اور 1,033 ایف آئی آرز کا اندراج کیا گیا۔

جعلی زرعی ادویات کے کاروبار کے خلاف کارروائی کے دوران 144 افراد کی گرفتاری عمل میں لائی گئی اور 3 کروڑ 65 لاکھ 27 ہزار 664 روپے مالیت کی جعلی و غیر معیاری زرعی ادویات اور کھادیں ضبط کر کے بطور مال مقدمہ حوالہ پولیس کی گئیں اور قانونی کاروائی عمل میں لائی گئی۔

(جاری ہے)

ترجمان نے مزید کہا کہ زرعی کھادیں مہنگے داموں فروخت کرنے والے ڈیلرز کو صوبہ بھر میں 1 کروڑ 79 لاکھ 47 ہزار 4 سو روپے جرمانہ کیا گیا ہے۔

ترجمان نے یہ بھی بتایا کہ کاشتکار جعلی زرعی ادویات و کھادوں کا کاروبار کرنے والے مافیا کی رپورٹ بذریعہ ایس ایم ایس/ واٹس ایپ 0300-2955539 پر کریں۔ اطلاع دینے والے کا نام صیغہ راز میں رکھا جائے گا اور 24 گھنٹوں میں کاروائی عمل میں لائی جائے گی۔ کاشتکاروں کو اگر زرعی ادویات کے سلسلے میں کوئی بھی شکایت ہو تو وہ محکمہ زراعت ٹاسک فورس سے فوراً رابطہ کریں۔