عید الاضحی کا دن اُس عظیم قربانی کی یاد تازہ کرتا ہے جس میں حضرت ابراہیم علیہ السلام نے اللہ تعالیٰ کے حکم پر اپنے لخت جگر حضرت اسماعیل علیہ السلام کو اللہ کی راہ میں قربانی کے لئے پیش کر دیا تھا

یہ عمل بارگاہ رب العزت میں اتنا مقبول قرار پایا کہ اس کی یاد منانے کو مسلمانوں کے لئے عبادت کا درجہ دے دیا گیا، یہ دن ہمیں سبق دیتا ہے کہ اللہ کی رضا اور خوشنودی کے لئے اپنی عزیز ترین اشیاء حتیٰ کہ اولاد کو بھی قربان کرنا پڑے تو گریز نہ کیا جائے صدر مملکت اسلامی جمہوریہ پاکستان ڈاکٹر عارف علوی کا عید الاضحیٰ کے موقع پر قوم کے نام پیغام

اتوار اگست 15:30

عید الاضحی کا دن اُس عظیم قربانی کی یاد تازہ کرتا ہے جس میں حضرت ابراہیم ..
اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - اے پی پی۔ 11 اگست2019ء) صدر اسلامی جمہوریہ پاکستان ڈاکٹر عارف علوی نے عید الاضحیٰ کے مبارک موقع پر پوری ملت اسلامیہ کو دلی مبارک باد پیش کرتے ہوئے دعا کی ہے کہ اللہ تعالیٰ ہم سب کی قربانیوں کو قبول فرمائے اوردنیاوی و اخروی نعمتوں سے سرفراز فرمائے،انھوں نے کہا کہ عید الاضحی کا دن اُس عظیم قربانی کی یاد تازہ کرتا ہے جس میں حضرت ابراہیم علیہ السلام نے اللہ تعالیٰ کے حکم پر اپنے لخت جگر حضرت اسماعیل علیہ السلام کو اللہ کی راہ میں قربانی کے لئے پیش کر دیا تھا ، یہ عمل بارگاہ رب العزت میں اتنا مقبول قرار پایا کہ اس کی یاد منانے کو مسلمانوں کے لئے عبادت کا درجہ دے دیا گیا، یہ دن ہمیں سبق دیتا ہے کہ اللہ کی رضا اور خوشنودی کے لئے اپنی عزیز ترین اشیاء حتیٰ کہ اولاد کو بھی قربان کرنا پڑے تو گریز نہ کیا جائے۔

(جاری ہے)

عید الاضحیٰ کے موقع پر اپنے خصوصی پیغام میں صدر مملکت نے کہا کہ ایثار و قربانی جیسے عظیم جذبے کی اہمیت اجاگر کرنے کی ضرورت تو ہمیشہ رہی ہے لیکن موجودہ دور میں اس کی اہمیت مزید بڑھ گئی ہے، اللہ رب العزت ہم سب کو عید الاضحیٰ کی حقیقی خوشیوں سے ہمکنار کرے اور قربانی جیسی عظیم عبادت کو اس کی روح کے مطابق سمجھنے کی توفیق عطا فرمائے اور اس کی تہہ میں پوشیدہ نعمتوں اور برکتوں سے مستفید فرمائے ۔

صدر مملکت نے کہا کہ آج کا دن عزم و ایثار اور اعلیٰ کردار کا وہ نمونہ پیش کرتا ہے جو رہتی دنیا تک رشد و ہدایت کا مظہر رہے گا ،یہ دن ہمیں سبق دیتا ہے کہ اللہ کی رضا اور خوشنودی کے لئے اپنی عزیز ترین اشیاء حتیٰ کہ اولاد کو بھی قربان کرنا پڑے تو گریز نہ کیا جائے ۔ انہوں نے کہا کہ ایثار و قربانی جیسے عظیم جذبے کی اہمیت کو اجاگر کرنے کی ضرورت تو ہمیشہ رہی ہے لیکن آج کے موجودہ دور میں اس کی اہمیت مزید بڑھ گئی ہے، ہمیں ذاتی اور گروہی مفادات سے خود کو آزاد کرنا ہوگا ، اعلیٰ انسانی مقاصد کے حصول کے لئے ایثار و قربانی سے دریغ نہ کرنا ہی اسلامی تعلیمات کا نچوڑ اور نبی رحمت عالم حضرت محمد صلی اللہ علیہ والہ وسلم کے اُسوہ حسنہ کا اہم اور بنیادی پہلو بھی ہے ۔

صدر مملکت نے کہا کہ موجودہ دور میں وطن عزیز کو درپیش مسائل کا حل بھی اسلام کی انہی آفاقی اقدار میں پوشیدہ ہے ۔ انہوں نے ملت اسلامیہ پر زور دیا کہ آئیے ہم اخوت ، رواداری ، مساوات اور صبر و تحمل جیسی اعلیٰ اقدار کو اپنا کر ملکی ترقی میں اپنا بھرپورکردار ادا کریں ۔ انہوں نے دعا کرتے ہوئے کہا کہ اللہ رب العزت ہم سب کو عید الاضحیٰ کی حقیقی خوشیوں سے ہمکنار کرے اور قربانی جیسی عظیم عبادت کو اس کی روح کے مطابق سمجھنے کی توفیق عطا فرمائے اور اس کی تہہ میں پوشیدہ نعمتوں اور برکتوں سے مستفید فرمائے ۔