Live Updates

مودی کوچیلنج ہے مقبوضہ کشمیرمیں کرفیواٹھا کرریفرنڈم کروا لے، وزیرخارجہ

ریفرنڈم کروانے سے دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی ہوجائے گا، پاکستان نے دوطرفہ مذاکرات سے کبھی انکارنہیں کیا، لیکن کرفیو نافذ کرنے والے جلاد سے کیسے مذاکرات کریں؟ وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی کی میڈیا سے گفتگو

sanaullah nagra ثنااللہ ناگرہ اتوار اگست 20:58

مودی کوچیلنج ہے مقبوضہ کشمیرمیں کرفیواٹھا کرریفرنڈم کروا لے، وزیرخارجہ
ملتان (اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔18 اگست 2019ء) وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کو چیلنج کیا ہے کہ مقبوضہ کشمیرمیں کرفیو اٹھا کرریفرنڈم کروا لیں، دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی ہوجائے گا، دوطرفہ مذاکرات سے کبھی انکارنہیں کیا، لیکن 13روز سے کرفیو نافذ کرنے والے جلاد سے مذاکرات نہیں کریں گے۔ انہوں نے آج ملتان میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ مسئلہ کشمیر اٹھانے پر پاکستانی اور عالمی میڈیا کوسلام پیش کرتا ہوں۔

کشمیریوں کے ساتھ کھڑے ہیں اور ہمیشہ کھڑے رہیں گے۔انہوں نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں 13 روز سے کرفیو نافذ ہے، لوگوں کا پوری دنیا سے رابطہ منقطع ہے۔عالمی میڈیا بھی کہہ رہا ہے کہ کشمیر میں بدترین ظلم جاری ہے۔ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ پاکستان نے دوطرفہ مذاکرات سے کبھی انکارنہیں کیا، لیکن کیا ہم اس جلاد سے مذاکرات کریں، جس نے مقبوضہ وادی میں 14 روز سے کرفیو نافذ کررکھا ہے۔

(جاری ہے)

مودی کو چیلنج ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں کرفیو اٹھا کرریفرنڈم کروا لیں، دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی ہوجائے گا۔ انہوں نے کہا کہ اب مودی کیخلاف بھارت کے اندر سے آوازیں اٹھ رہی ہیں۔ بھارت میں مسلمانوں کے علاوہ دیگر اقلیتیں بھی ظلم کا شکار ہیں۔اس سے قبل وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے بھارتی وزیر دفاع راج ناتھ سنگھ کی ہرزہ سرائی پر ردعمل دیتے ہوئے کہا کہ بھارتی وزیر دفاع کا بیان اس بدترین صورتحال کا عکاس ہے جس میں بھارت اس وقت پھنسا ہوا ہے۔

یہ صورتحال بھارتی غیر قانونی ویکطرفہ فیصلوں کے باعث پیدا ہوئی۔ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ بھارتی اقدام سے خطے اور خطے سے باہر کا امن واستحکام متاثر ہوا۔ جموں وکشمیرمیں تمام آبادی کا لاک ڈاؤن قابل مذمت ہے۔ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ مقبوضہ وادی میں یہ لاک ڈاؤن دو ہفتے سے جاری ہے۔ مقبوضہ وادی میں لاک ڈاؤن سے انسانی المیہ مزید گہرا ہوتا جا رہا ہے۔

شاہ محمود قریشی نے کہا کہ عالمی انسانی حقوق کی تنظیموں اورمیڈیا نے بھی اس صورتحال کورپورٹ کیا ہے۔ عالمی برادری سمیت سلامتی کونسل نے بھی اس صورتحال کا ادراک کیا ہے۔ اسی طرح وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے اپنے ایک بیان میں کابل بم دھماکے میں کثیر تعداد میں ہونے والی شہادتوں پر گہرے دکھ اور غم کا اظہار کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ معصوم جانوں کو نشانہ بنانے والے انسانیت کے دشمن ہیں۔

مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہا کہ پاکستان نے خود دہشت گردی کے خلاف ایک طویل جنگ لڑی ہے ۔ انہوں نے کابل دھماکے میں شہید ہونے والوں کے لیے دعائے مغفرت اور زخمیوں کے لئے جلد صحت یابی کی دعا کی ہے۔ دوسری جانب غیرملکی خبر ایجنسی کے مطابق کشمیرکی خصوصی حیثیت تبدیل کرنے کے بعد ہزاروں کشمیری گرفتار کرلیے گئے۔ بتایا گیا ہے کہ مقبوضہ کشمیرمیں کرفیوکے نفاذ سے اب تک گرفتاریوں کی تعداد4000 ہوگئی۔ بھارتی حکومتی گرفتار کشمیریوں کو بغیر کسی وجہ کے دوسال تک جیل میں رکھ سکتی ہے۔
تنازعہ مقبوضہ کشمیر کی بھڑکتی ہوئی آگ سے متعلق تازہ ترین معلومات